مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

عمران کا اگلے مہینے امریکی دورہ ہوگا

ڈرون نے بتایا کہ وزیر اعظم عمران خان اگلے مہینے میں امریکہ کے دورے کا امکان رکھتے ہیں، تاہم دونوں ممالک اب بھی تاریخ کو حتمی شکل دینے کی کوشش کر رہے ہیں.

ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں پر تبصرہ کرنے سے پہلے ایک سینئر سفارتخانہ نے کہا کہ “شاید، لیکن حتمی نہیں ہے،” انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم 20 جولائی کو واشنگٹن کا دورہ کرسکتے ہیں.

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے جمعہ کو اسلام آباد میں صحافی کو بتایا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹومپ نے جون میں وزیر اعظم کو دعوت دی لیکن وہ بجٹ سیشن کی وجہ سے دورہ نہیں کر سکے.

خارجہ وزیر نے بھی کہا کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان مذاکرات “اہم علاقائی معاملات” پر توجہ مرکوز کریں گے. پاکستان نے امریکہ کے طالبان مذاکرات کو شروع کرنے میں چھلانگ لگانے میں امریکہ کی مدد کی ہے، جس میں دوہہ کو ہفتے کے روز دوبارہ شروع کیا گیا ہے

اب امریکہ چاہتا ہے کہ اسلام آباد کو افغان حکومت سے براہ راست بات چیت کرنے کے لۓ طالبان کو اپنے اثر و رسوخ کا استعمال کرنا چاہئے.

عسکریت پسندوں نے کابل سے بات کرنے سے انکار کر دیا اور کہا کہ یہ “غیر معمولی حکومت” ہے، جو حقیقی طاقتوں سے نہیں ہے.

اس ہفتے کے آخر میں، پاکستان نے بھنگبن میں ایک انٹرا – افغان اجلاس کی میزبانی کی جس میں افغان حکومت کو عسکریت پسندوں کو زیادہ قابل قبول بنانے کی جانب پہلا قدم تھا.

کابل نے اپنے نمائندوں کو اجلاس میں بھیجا، تاہم طالبان نے قیام کرنے کا انتخاب کیا.

جمعہ کو افغان صدر اشرف غني نے بھی اسلام آباد کا دورہ کرنے کے لئے طالبان کے رابطے سے متعلق رابطے کھولنے کے لۓ اس کی مدد کی.

واشنگٹن میں ڈپلومیٹک مبصرین کا کہنا ہے کہ اس کوششوں کو ٹراپ انتظامیہ کو یقین ہے کہ افغانستان میں مذاکرات کے حل کے لئے اسلام آباد اپنی کوششوں کو سنجیدگی سے سنبھالا ہے.

مبصرین نے بتایا کہ “واشنگٹن کو لگتا ہے کہ ایک وائٹ ہاؤس کا دورہ، اس مرحلے پر، اسلام آباد کو افغان امن عمل کی حمایت جاری رکھنے کے لئے حوصلہ افزائی کرے گی.”

دونوں حکومتوں نے اس سال جنوری سے مسٹر خان کے دورے کی امکانات کو تلاش کر رہے ہیں جب صدر ٹرمپ نے کہا کہ پاکستان میں نئی ​​قیادت کے ساتھ ملاقات “جلد ہی” ہوسکتی ہے.

اس پیشکش کے بعد اس کے انتظامیہ نے دوحہ میں طالبان کے ساتھ امن مذاکرات کا آغاز کیا. “لہذا، میں پاکستان میں نئی ​​قیادت کے ساتھ ملنے کا منتظر ہوں.

انہوں نے کابینہ کے اجلاس کے بعد وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم یہ کہیں بھی دور دور مستقبل میں کر رہے ہیں جس نے افغان امن عمل کے لئے پاکستان کی حمایت کا جائزہ لیا.

واشنگٹن میں امریکہ اور پاکستان کے سفارتی ذرائع دونوں کی تصدیق کرتی ہے کہ مسٹر خان جلد ہی واشنگٹن کا دورہ کرسکتے ہیں مگر وہ اپنے شیڈول میں مختلف ہیں. کچھ ذرائع کا کہنا ہے کہ مسٹر خان اگلے ماہ آ رہے ہیں جبکہ دیگر کہتے ہیں کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات ستمبر میں ہوسکتی ہے جب مسٹر خان اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس کے لئے امریکہ کو سفر کریں گے.

ثاقب شیخ۔