ہیومن ڈیویلپمنٹ انڈیکس میں پاکستان سات درجے نیچے آ گیا

یو این ڈی پی کی رپورٹ کے مطابق

 جمعرات کو جاری ہونے والی یو این ڈی پی کی رپورٹ کے مطابق، پاکستان 2021-2022 کی ہیومن ڈیویلپمنٹ انڈیکس میں 192 ممالک میں سے 161 ویں نمبر پر آیا ہے۔ یوں پاکستان ہیومن ڈیویلپمنٹ انڈیکس میں سات درجے نیچے آگیا ہے۔ 

پچھلے سال پاکستان 189 ممالک میں 154 نمبر پر تھا۔ 

رپورٹ کے مطابق، پاکستان کی پیدائش کے وقت متوقع عمر 66.1 سال ہے اور اسکول کی تعلیم کے متوقع سال 8 ہیں۔ ملک کی مجموعی فی کس قومی آمدنی 4,624 ڈالر ہے۔ رپورٹ میں نشاندہی کی گئی ہے کہ مختلف آب و ہوا کے جھٹکے عالمی نظام کو متاثر کر رہے ہیں، جو گزشتہ چند سالوں میں حاصل کی گئی ترقی کو پیچھے دھکیل رہے ہیں۔ 

موسمیاتی تبدیلی کی ایک مثال

ایسا کرتے ہوئے، اس نے پاکستان میں سیلاب کو دنیا بھر میں دیکھے جانے والی موسمیاتی تبدیلی کی ایک مثال کے طور پر درجہ بندی کی ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | ایچ ای سی کا طلباء کے لئے بڑا اعلان

یہ بھی پڑھیں |  سعودی سفیر نے پاکستانی فیملی کو فری عمرہ ٹکٹس دے دیں

 تازہ ترین ہیومن ڈیویلپمنٹ انڈیکس میں سوئٹزرلینڈ سب سے آگے ہے جبکہ ناروے اور آئس لینڈ دوسری اور تیسری پوزیشن پر ہیں۔ نو جنوبی ایشیائی ممالک میں – افغانستان، بنگلہ دیش، بھوٹان، ہندوستان، اسلامی جمہوریہ ایران، مالدیپ، نیپال، پاکستان، سری لنکا ہیومن ڈیویلپمنٹ انڈیکس کے کم زمرے میں ہیں۔ 

سری لنکا اپنی پوزیشن کو 9 پوائنٹس سے بہتر

 یہاں یہ بات دلچسپ ہے کہ بحران سے دوچار سری لنکا اپنی پوزیشن کو 9 پوائنٹس سے بہتر کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے اور انڈیکس میں 73 ویں پوزیشن پر پہنچ گیا ہے۔

 ایران 76 ویں نمبر پر تین درجے پیچھے ہے۔ اس کے بعد مالدیپ 90 ویں نمبر پر ہے۔ 

ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سروے کے سال تقریباً 90 فیصد ممالک نے “ہیومن ڈیویلپمنٹ میں الٹ پلٹ” دیکھا ہے جس عالمی بحران کی طرف اشارہ کیا ہے۔ 

 رپورٹ کے مطابق، ان رکاوٹوں کے ذمہ دار دو بڑے عوامل ہیں؛ پہلا کوویڈ19 اور دوسرا روس یوکرین جنگ ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔