ہوا کی آلودگی پھیپھڑوں کے کینسر میں کیسے مددگار ہے؟ سائنسدانوں نے بتا دیا

سائنس اور معاشرے کے لیے ایک اہم قدم

سائنسدانوں نے کہا ہے کہ انہوں نے اس طریقہ کار کی نشاندہی کی ہے جس کے ذریعے ہوا کی آلودگی سگریٹ نوشی نہ کرنے والوں میں بھی پھیپھڑوں کے کینسر میں مدد کرتی ہے۔ اس دریافت کو ایک ماہر سائنسدان نے “سائنس اور معاشرے کے لیے ایک اہم قدم” قرار دیا ہے۔ 

تحقیق نے جیواشم ایندھن کو جلانے سے پیدا ہونے والے چھوٹے ذرات سے پیدا ہونے والے صحت کے خطرے کو واضح کیا ہے جس سے موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لیے مزید فوری کارروائی کے لیے تازہ مطالبات سامنے آئے ہیں۔

 برطانیہ کے فرانسس کرک انسٹی ٹیوٹ کے چارلس سوانٹن کے مطابق، یہ کینسر کی روک تھام کے ایک نئے شعبے کی راہ ہموار کر سکتا ہے۔ 

یورپی سوسائٹی فار میڈیکل آنکولوجی

 سوانٹن نے یہ تحقیق پیش کی، جو ابھی تک پیرس میں ہونے والی یورپی سوسائٹی فار میڈیکل آنکولوجی کی سالانہ کانفرنس میں ہم مرتبہ نظرثانی شدہ جریدے میں شائع نہیں ہوئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں | حمل کے دوران ماں کی خوراک کا بچے کی خوراک کی ترجیحات سے تعلق ہے 

یہ بھی پڑھیں | موٹاپے سے بچنے کے لئے یہ چار اقدام کیجئے 

 طویل عرصے سے سوچا جاتا ہے کہ فضائی آلودگی ان لوگوں میں پھیپھڑوں کے کینسر کے زیادہ خطرے سے منسلک ہے جنہوں نے کبھی تمباکو نوشی نہیں کی۔ 

 سوانٹن نے بتایا کہ لیکن ہم واقعی یہ نہیں جانتے تھے کہ آلودگی براہ راست پھیپھڑوں کے کینسر کا سبب بن رہی ہے – یا کیسے؟

ڈی این اے کی تبدیلی

  روایتی طور پر یہ خیال کیا جاتا ہے کہ سرطان پیدا کرنے والے، جیسے سگریٹ کے دھوئیں یا آلودگی میں، ڈی این اے کی تبدیلیوں کا سبب بنتا ہے جو پھر کینسر بن جاتا ہے۔ 

  پچھلی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ڈی این اے میوٹیشنز کینسر کا سبب بنے بغیر بھی موجود ہو سکتے ہیں اور یہ کہ زیادہ تر ماحولیاتی کینسر اتپریورتنوں کا سبب نہیں بنتے۔

 مستقبل میں کینسر کی گولی؟ 

فرانسس کرک انسٹی ٹیوٹ اور یونیورسٹی کالج لندن کی تحقیقی ٹیم نے انگلینڈ، جنوبی کوریا اور تائیوان میں 460,000 سے زائد افراد کے صح مستقبل میں کینسر کی گولی؟ ت کے ڈیٹا کا تجزیہ کیا ہے۔

 انہوں نے دیکھا کہ چھوٹے پی ایم2.5 آلودگی کے ذرات – جو کہ 2.5 مائیکرون سے کم ہیں – کے سامنے آنے سے ای جی ایف آر جین میں تغیرات کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ 

پھیپھڑوں کے کینسر

 چوہوں پر لیبارٹری کے مطالعے میں، ٹیم نے دکھایا کہ ذرات ای جی ایف آر جین کے ساتھ ساتھ کے آر اے ایس جین میں بھی تبدیلیاں لاتے ہیں، دونوں کا تعلق پھیپھڑوں کے کینسر سے ہے۔

 آخر میں، انہوں نے انسانی پھیپھڑوں کے بافتوں کے تقریباً 250 نمونوں کا تجزیہ کیا جو تمباکو نوشی یا بھاری آلودگی سے کبھی بھی ڈائریکٹ متاثر نہیں ہوئے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔