مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

گورنمنٹ کا بلوچ علیحدگی پسندوں سے مذاکرات پر غور، فواد چوہدری

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت بلوچ قوم پرستوں اور علیحدگی پسندوں کے ساتھ مذاکرات کا ایجنڈا طے کرنے پر غور کر رہی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق منگل کو ٹویٹر پر بات کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ بلوچستان میں بھارت کا دہشت گردی کا نیٹ ورک بڑی حد تک ختم کردیا گیا ہے۔ 

انہوں نے ٹویٹ کیا کہ اب ہمیں بلوچ قوم پرستوں کے ساتھ بات چیت کا ایجنڈا طے کرنا ہے۔ 

فواد چوہدری نے بلوچستان میں ترقیاتی منصوبوں کے بارے میں یہ بھی کہا کہ وفاقی حکومت نے صوبے میں مجموعی طور پر 731 ارب روپے مالیت کے 131 منصوبے مکمل کرنے کا ارادہ کیا ہے۔ 

انہوں نے مزید کہا کہ صرف اس سال کے لئے ، بلوچستان حکومت کا ترقیاتی پیکیج 180 بلین روپے ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم عمران خان بلوچستان کو اپنے دل سے قریب رکھتے ہیں۔ 

وزیر اعظم نے اعلان کیا تھا کہ حکومت اس اختیار پر غور کر رہی ہے کیونکہ صوبے کی صورتحال بدل چکی ہے اور پاکستان ایک بہتر مستقبل کی طرف گامزن ہے۔ 

وزیر اعظم عمران خان بلوچستان میں ایک تقریب سے خطاب کررہے تھے ، جہاں انہوں نے کہا تھا کہ ماضی کی کچھ شکایات کی وجہ سے یہ لوگ ریاست سے ناراض ہوسکتے ہیں یا بھارت نے انہیں پاکستان میں دہشت پھیلانے کے لئے استعمال کیا ہو گا۔

یہ بھی پڑھیں | پاکستان جنرل اسمبلی اقوام متحدہ میں فلسطین کا مسئلہ اٹھائے گا   

 انہوں نے نوٹ کیا کہ لیکن اب ، صورتحال بدل گئی ہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے گوادر کے اپنے یومیہ دورے پر گوادر فری زون ، ایکسپو سینٹر ، زراعت صنعتی پارک اور تین فیکٹریوں کا افتتاح کیا۔ 

انہوں نے متعدد مفاہمت ناموں پر دستخطوں کا مشاہدہ کیا جس کا مقصد ایک جدید ترین اسپتال ، ہوائی اڈے اور پیشہ ورانہ انسٹی ٹیوٹ کی تعمیر ہے۔

 وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ان کا واحد مقصد نہ صرف انتخابات میں کامیابی ہے بلکہ وزیر اعظم بننے کے بعد بلوچستان کی ترقی کرنا ہے۔ 

وزیر اعظم نے کہا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف 24 بار لندن گئے تھے ، لیکن وہ کبھی بلوچستان نہیں آئے ، جبکہ سابق صدر آصف علی زرداری نے 51 مرتبہ دبئی کا دورہ کیا ، لیکن ان کے پاس گوادر جانے کا وقت کبھی نہیں ملا۔

 انہوں نے کہا کہ جو شخص پاکستان کے بارے میں سوچتا ہے وہ بلوچستان کے بارے میں بھی سوچے گا لیکن اگر کوئی شخص انتخابات میں کامیابی حاصل کرنا چاہتا ہے تو وہ فیصل آباد ڈویژن پر توجہ دے گا جس کو بلوچستان سے زیادہ پارلیمنٹ میں زیادہ نشستیں حاصل ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔