گرمیوں میں یہ 5 فروٹ (پھل) لازمی کھائیں

گرمیاں آ گئی ہیں۔ پاکستان میں جون اور جولائی شدید گرمی کے مہینے ہوتے ہیں۔ مئی بھی گرمی کا ہی مہینہ ہے۔ آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ گرمیوں میں کون سے 5 فروٹ آپ کو لازمی کھانے چاہیے۔

گرمیوں میں یہ 5  فروٹ (پھل) لازمی کھائیں

تربوز

 تربوز موسم گرما کا ایک کلاسک پھل ہے جس میں کافی مقدار میں پانی ہوتا ہے جو آپ کو ہائیڈریٹ رکھنے میں مدد کرتا ہے۔ یہ میٹھا اور رسیلا ہوتا ہے۔ یہ گرمیوں کا بہترین پھل ہے۔ تربوز وٹامن اے اور سی کے ساتھ ساتھ لائکوپین جیسے اینٹی آکسیڈنٹس سے بھی بھرپور ہوتا ہے۔ 

 انناس

انناس ایک اشنکٹبندیی پھل ہے جو بہترین ذائقہ رکھتا ہے۔ یہ وٹامن سی، مینگنیج اور برومیلین سے بھرا ہوا ہے، ایک انزائم جو ہاضمے میں مدد کرتا ہے۔ انناس میٹھے اور ٹینگی ذائقے کا ہوتا ہے اور اسے ڈائریکٹ کھانے کے علاوہ پھلوں کے سلاد، اسموتھیز یا گرلڈ ڈشز میں شامل کیا جا سکتا ہے۔ 

 آم

آم کو پھلوں کا بادشاہ بھی کہا جاتا ہے۔ آم موسم گرما میں عموما سب سے زیادہ کھایا جانے والا پھل بھی ہے کیونکہ یہ قریبا سبھی کو پسند ہوتا ہے۔ یہ رسیلا، میٹھا اور خوشبودار ہوتا ہے۔ آم وٹامن سی، وٹامن اے اور غذائی ریشہ سے بھرپور ہوتے ہیں۔ دودھ کے ساتغ آپ اس کا شیک بھی آپ بنا سکتے ہیں جو بہت فائدہ مند ہے۔

یہ بھی پڑھیں | رات کو ایک گلاس دودھ پینے  کے 5 فوائد

یہ بھی پڑھیں |  گرمیوں میں کس طرح کا لباس پہننا چاہیے؟

 بیریاں (اسٹرابیری، بلیو بیریز، رسبری)

 گرمیوں کے موسم میں اسٹرابیری وافر مقدار میں ہوتی ہیں اور ان میں اینٹی آکسیڈنٹس، وٹامنز اور فائبر موجود ہوتے ہیں۔ اسٹرابیری رسیلی اور میٹھی ہوتی ہیں۔ یہ پھل ورسٹائل ہوتے ہیں اور انہیں خود کھایا جا سکتا ہے، دہی، اناج، سلاد میں شامل کیا جا سکتا ہے یا بیکڈ اشیاء جیسے پانی اور دودھ میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ 

 کیوی

کیوی ایک چھوٹا سا پھل ہے جس کا بیرونی حصہ دھندلا بھورا اور متحرک سبز گوشت ہے۔ اس کا ذائقہ ٹینگا اور قدرے میٹھا ہوتا ہے جو گرمی کے دنوں میں تازگی بخشتا ہے۔ کیوی وٹامن سی، وٹامن کے، فائبر اور اینٹی آکسیڈنٹس کا بہترین ذریعہ ہیں۔ 

 یاد رکھیں کہ پھل کھانے سے پہلے اچھی طرح دھو لیں اور بہترین ذائقے اور غذائیت  کے لیے پکے ہوئے پھلوں کا انتخاب کریں۔ موسم گرما میں صحت مند اور تروتازہ رہنے کے لیے متوازن غذا کے حصے کے طور پر ان پھلوں سے لطف اٹھائیں۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔