کراچی: سکول اسٹاف میں 13 فیصد کورونا وائرس کی تشخیص

15 جیسا کہ آج سے تعلیمی ادارے ملک بھر میں دوبارہ سے کھلنے لگے ہیں تو ، کراچی میں قائم ہیلتھ کیئر اسٹارٹ اپ نے میٹروپولیس کے آٹھ نجی اسکولوں میں اسکول کے عملے میں 13 فیصد کورونا کے مثبت کیسز پائے ہیں اور اس صورتحال کو انتہائی تشویش ناک قرار دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق فائنڈ مائی ڈاکٹر کے بانی اور سی ای او سعد صدیقی نے نجی ٹی وی چینل کو بتایا کہ ہم نے پچھلے دو ہفتوں میں آٹھ اسکولوں میں 2،000 سے زیادہ افراد کے ٹیسٹ کروائے جن میں سے 13٪ مثبت تھے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ وہ رواں ہفتے شہر کے مختلف نجی اسکولوں میں 1،500 مزید ٹیسٹ لیں گے۔ صدیقی نے جانچ کے لئے استعمال ہونے والی کٹ کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اسکولوں میں مثبت کورونا ملازمین کا سراغ لگانے کے لئے کوویڈ19 ریپڈ ٹیسٹ کٹ کا استعمال کیا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستان میں بھی وہی کٹ استعمال ہورہی ہے جس کی وضاحت کرتے ہوئے کہ یہ کٹ دو مثبت نتائج آئی جی ایم اور آئی جی جی کو دکھاتی ہے۔ آئی جی ایم کے نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ آیا وائرس جسم میں موجود ہے اور آئی جی جی کے نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ فرد نے وائرس کا معاہدہ کیا تھا اور بازیافت کے بعد اس کے خلاف اینٹی باڈیز تیار کرلی ہیں۔

 جب ان سے پوچھا گیا کہ آیا ان کی کمپنی نے حکومت سے رابطہ کیا ہے تو صدیقی نے کہا کہ انہوں نے ان سے بات نہیں کی ہے لیکن کہا ہے کہ صورتحال “انتہائی تشویشناک” ہے۔ انہوں نے والدین سے اپیل کی کہ وہ اپنے بچوں کی نگرانی کریں اور بوڑھوں سے دور رکھیں کیونکہ وہ ان میں وائرس منتقل کرسکتے ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے وزیر تعلیم شفقت محمود نے پچھلے کچھ ہفتوں کے دوران وائرس کے نئے واقعات میں مستقل کمی آنے کے بعد مرحلہ وار 15 ستمبر سے تعلیمی سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔ 

حکومت نے مارچ میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے تمام تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ 

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *