وزیر اعظم عمران خان کی ارتغرل ٹیم سے ملاقات، پاک چائنہ دوستی پر بات چیت

وزیر اعظم عمران خان نے پاکستانی تفریحی صنعت پر زور دیا کہ وہ مشہور ترک درامہ ارتغرل غازی سے متاثر ہو کر نوجوانوں کو غیر معیاری اور مسحور کن اجزاء کا خیرمقدم متبادل پیش کرے تاکہ وہ معیاری مقامی پروڈکشن لے کر آئیں۔

 انہوں نے کہا کہ اگر پاکستانی فلم اور ڈرامہ انڈسٹری معیاری مقامی پروڈکشن پیش کرے گی تو یہ نہ صرف ترقی کرے گی بلکہ نوجوانوں کو غیر معیاری اور گلیمرائیز مواد کا متبادل بھی فراہم کرے گی اور ارتغرل کی طرح ان کا بھی خیرمقدم کیا جائے گا۔ 

ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم نے یہاں کمال ٹیکڈن کی سربراہی میں ترکی کے مشہور ڈرامہ سیریل ارتغرل کی بانی ٹیم سے ملاقات کے دوران کیا۔

 وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز ، کشمیر کمیٹی کے چیئرمین شہریار خان آفریدی اور ترکی اور پاکستان فلمی صنعت کے نمائندے اس میٹنگ میں موجود تھے۔ اس ملاقات میں ترکی اور پاکستان کے مابین باہمی تعاون کے ذریعے پیش کی جانے والی خلافت تحریک میں برصغیر کی مشہور شخصیت ترک لالا کے کردار پر مبنی مجوزہ ٹیلی ویژن سیریز پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ 

یہ بھی پڑھیں | فیس بک اور ٹویٹر نے ڈونلڈ ٹرمپ کو کیپٹل ہل حملےکی حمایت پر بلاک کر دیا

وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستانی ڈرامے 1980 کی دہائی تک دنیا میں بہت مشہور تھے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی فلم اور ڈرامہ انڈسٹری کو مقامی ثقافت کے فروغ کے لئے کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ مغرب سے متاثر نوجوانوں کو ان کی حقیقی ثقافت کے بارے میں آگاہ کیا جاسکے اور ٹیلی کاسٹ کی وجہ سے پڑوسی ممالک کی نئی نسل کو درپیش معاشرتی برائیوں سے بچایا جاسکے۔

  وزیر اعظم نے مزید کہا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ نئی نسل برصغیر میں مسلمانوں کی حکمرانی کے سنہری دور سے واقف نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سنہری دور پر فلموں اور ڈراموں کی تیاری کرکے پروپیگنڈا کرنے والوں کے ڈیزائن کو ناکام بنانے کی کوشش کی جانی چاہئے۔ 

کشمیر کمیٹی کے چیئرمین شہریار خان آفریدی نے خلافت موومنٹ میں ترک لالا کے اہم کردار اور ترکی میں ان کی اہمیت سے آگاہ کیا۔ اجلاس میں نوجوانوں میں تاریخ میں اپنے ہیروز کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ 

 وزیر اعظم کے پاکستان میں ترکی کے ڈراموں کی نشریات کے فیصلے کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان اور ترک صدر رجب طیب اردگان کا یہ نظریہ مشترک ہے کہ نوجوانوں میں ان کی تاریخ اور ثقافت کے بارے میں آگاہی پیدا کرنا کسی ملک کی ترقی کے لئے ناگزیر ہے۔

 اس کے علاوہ انہوں نے وزیر اعظم کو بتایا کہ ترک لالہ کے اعزاز میں ہر سال ترکی میں 30 جون کو قومی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ترک لالہ سے متعلق ٹیلی ویژن سیریز نہ صرف نوجوانوں میں تحریک خلافت کے بارے میں شعور پیدا کرے گی بلکہ پاک ترکی تعلقات میں ایک نئے باب کا اضافہ بھی کرے گی۔ وزیر اعظم نے ترک لالہ سے متعلق مجوزہ ٹیلی ویژن سیریز کے منصوبے کی تعریف کرتے ہوئے حکومت کی طرف سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔