عدالتی حکم: عامر لیاقت کے جسد خاکی کا پوسٹ مارٹم 23 جون کو شیڈیول

عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کا مطالبہ کرنے والی درخواست کے بعد پوسٹ مارٹم کا حکم دیا

کراچی کی مقامی عدالت نے ہفتے کے روز ٹی وی میزبان اور سابق سیاستدان عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کا مطالبہ کرنے والی درخواست کے بعد پوسٹ مارٹم کا حکم دیا ہے جس کے بعد 23 جون 2022 کو پوسٹ مارٹم شیڈیول کیا گیا ہے۔

 عدالت کی سماعت کے دوران سرکاری وکیل نے کہا کہ ان کے ورثا پوسٹ مارٹم نہیں کرانا چاہتے کیونکہ اس سے ان کے والد کی “روح” کو تکلیف پہنچے گی۔

سیاستدان کی موت میں کسی قسم کی بدتمیزی کا شبہ نہیں

 ورثاء کے مطابق، انہیں سابق سیاستدان کی موت میں کسی قسم کی بدتمیزی کا شبہ نہیں ہے۔ 

پولیس نے آج عدالت میں ایک رپورٹ بھی پیش کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ پولس سرجن پوسٹ مارٹم ہونے تک موت کی وجہ کا پتہ نہیں لگا سکتا۔

یہ بھی پڑھیں | افغانستان: زلزلے سے اموات کی تعداد 280 ہو گئی  

یہ بھی پڑھیں | بریکنگ: ڈالر کے مقابلے میں روپیہ 207 کا ہو گیا    

شہری نے پوسٹ مارٹم کے حوالے سے جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں درخواست دائر کی

 یہ درخواست عبدالاحد نامی شہری نے پوسٹ مارٹم کے حوالے سے جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں درخواست دائر کی تھی۔ 

 درخواست گزار کے وکیل بیرسٹر ارسلان راجہ نے کہا کہ عامر لیاقت کی موت “پراسرار حالات” میں ہوئی اور مزید کہا کہ موت کی وجہ کا تعین کرنا ضروری ہے کیونکہ مرحوم قانون ساز اور ٹی وی میزبان تھے۔ 

 درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ عامر لیاقت کی لاش نکالنے اور پوسٹ مارٹم کے لیے ایک خصوصی بورڈ تشکیل دیا جائے، جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ اس کی موت کی وجہ معلوم کرنا ضروری ہے۔ جس کے بعد عدالت نے پوسٹ مارٹم کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں