بھارت میں گستاخانہ بیانات: پاکستان کی اقوام متحدہ سے خاموش نا رہنے کی اپیل

ہندوستان میں اسلام فوبیا کی بڑھتی ہوئی لہر

سکریٹری خارجہ سہیل محمود نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے مستقل ارکان پر زور دیا ہے کہ وہ بڑھتی ہوئی نفرت انگیز تقاریر کا نوٹس لیں۔ ہندوستان میں اسلام فوبیا کی بڑھتی ہوئی لہر کے طور پر حکمران بی جے پی رہنماؤں کے گستاخانہ تبصروں کو مسلم ممالک کی جانب سے شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

مسلمانوں نے ترجمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا

 گزشتہ ہفتے بی جے پی کی ترجمان نوپور شرما نے پیغمبر اسلام (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی شان میں گستاخانہ تبصرہ کیا تھا۔ اس عمل نے ہندوستانی ریاست میں جھڑپوں کو جنم دیا جہاں مسلمانوں نے ترجمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔

 سہیل محمود نے اس ہفتے اسلام آباد میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے مستقل ارکان (پی-5) کے ایلچی سے انفرادی طور پر ملاقات کی تاکہ انہیں ہندوستان کی حکمران جماعت بی جے پی کے دو سینئر عہدیداروں کے تضحیک آمیز اور جارحانہ ریمارکس سے آگاہ کیا جا سکے۔

یہ بھی پڑھیں | انڈیا: بی جے پی کی جانب سے نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم گستاخی کی شان میں گستاخی کے بعد شدید احتجاج 

یہ بھی پڑھیں | عرب ممالک بھارت کے خلاف احتجاج کیوں کر رہے ہیں؟ 

بین الاقوامی امن و سلامتی کی بحالی اور اقوام متحدہ کے چارٹر میں درج اصولوں کو برقرار رکھنے کے حوالے سے پی-5 ممالک کی خصوصی ذمہ داری کو یاد کرتے ہوئے، خارجہ سکریٹری نے ان سے مطالبہ کیا کہ وہ اس گھناؤنی ترقی، بڑھتی ہوئی نفرت انگیز تقاریر کا نوٹس لیں۔

افراد کے خلاف بی جے پی کی بے پروا اور علامتی تادیبی کارروائی

 خارجہ سکریٹری نے اس بات پر زور دیا کہ ان افراد کے خلاف بی جے پی کی بے پروا اور علامتی تادیبی کارروائی سے دنیا بھر میں مسلمانوں کو پہنچنے والے نقصان کو کم نہیں کیا جائے گا۔ 

 مسلمانوں کے خلاف ریاستی طور پر منظور شدہ ظلم و ستم کے واضح اور مستقل نمونے کو نوٹ کرتے ہوئے، سکریٹری خارجہ نے مزید کہا کہ حالیہ توہین آمیز تبصروں کی واضح طور پر مذمت کرنے میں بی جے پی قیادت اور ہندوستانی حکومت کی ناکامی ’ہندوتوا‘ کے شدت پسندوں کے ہاتھوں یرغمال ہونے کا ایک اور ثبوت ہے۔

 انہوں نے کہا کہ بھارت پر زور دیا جانا چاہیے کہ وہ ذمہ داروں کے خلاف فیصلہ کن اور قابل عمل کارروائی کرے۔ ہندوستان کو اپنی مذہبی اقلیتوں بالخصوص اس کی مسلم آبادی کے حقوق سلب کرنے کے لیے بھی جوابدہ ہونا چاہیے اور ان کے بنیادی حقوق اور آزادیوں کے مکمل تحفظ کو یقینی بنانے پر زور دیا جانا چاہیے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں