امریکہ میں منکی پاکس کے 5 ہزار کیس رپورٹ، نیو یارک میں ہیلتھ ایمرجنسی کا اعلان

امریکہ میں مونکی پوکس کے 5 ہزار سے زیادہ کیس رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ نیویارک نے ہفتے کے آخر میں صحت عامہ کی ایمرجنسی کا اعلان کیا ہے۔

اہلکار ویکسین تک رسائی اور رسائی کو وسعت دیں

نیو یارک سٹی کے میئر ایرک ایڈمز نے زور دے کر کہا کہ ان کے اہلکار ویکسین تک رسائی اور رسائی کو وسعت دیں گے اور یہ بتاتے ہوئے کہ تقریباً 150,000 نیو یارک کے افراد اس وقت مانکی پوکس کے خطرے سے دوچار ہو سکتے ہیں۔ 

 ایڈمز نے اسے ایک “بڑھتا ہوا پھیلاؤ” قرار دیا کیونکہ نیویارک کے گورنر کیتھی ہوچل نے ایک حکم نامہ جاری کیا جس میں مانکی پوکس وائرس کو ریاستی آفت کی ہنگامی حالت قرار دیا گیا ہے۔

سی ڈی سی کے مطابق، امریکہ کے مالیاتی مرکز میں مونکی پوکس کے 1,345 کیسز ریکارڈ کیے گئے ہیں جیسا کہ ہوچل نے نشاندہی کی کہ نیویارک میں مونکی پوکس کے چار میں سے ایک کیس امریکہ میں ہے۔ 

 کیلیفورنیا، ٹیکساس، فلوریڈا، الینوائے اور واشنگٹن ڈی سی میں بھی کئی دیگر امریکی ریاستوں کے علاوہ مونکی پوکس کے کیسز ریکارڈ کیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں | امریکہ روس کے لئے اہم خطرہ ہے، پوتن  

یہ بھی پڑھیں | کشمیری مسلمان نے پانچ سو میٹر لمبے صفحے پر مکمل قرآن مجید لکھ کر عالمی ریکارڈ بنا دیا 

سی ڈی سی نے کہا ہے کہ ہم جنس پرستوں، ابیلنگیوں اور دوسرے مردوں میں بندر پاکس کے بہت سے کیسز پائے گئے ہیں جو مردوں کے ساتھ جنسی تعلق رکھتے ہیں جن میں بخار، سر درد، پٹھوں میں درد، سردی لگنا اور تھکن جیسی علامات ظاہر ہوتی ہیں۔ علامات میں سانس کے مسائل جیسے گلے میں خراش، ناک بند ہونا اور کھانسی بھی شامل ہیں۔ 

 جیسا کہ امریکہ میں منکی پاکس کے کیسز میں مسلسل اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے، اسپین میں گزشتہ ہفتے وائرس کی وجہ سے دو اموات ریکارڈ کی گئیں۔ 

ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ ریاستہائے متحدہ میں مونکی پوکس کے 18,000 سے زیادہ کیسز کا پتہ چلا ہے جب کہ اسپین یورپ میں 4,000 سے زیادہ کیسز کے ساتھ سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے۔ 

 برازیل میں، بیلو ہوریزونٹے میں مونکی پوکس وائرس سے متاثرہ ایک شخص کی موت ہوگئی یہاں تک کہ حکام نے اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے کہ مریض کو شریک مرض کا سامنا کرنا پڑا اور اس بات پر زور دیا کہ “موت کی شرح بہت کم ہے۔ 

برازیل کے محکمہ صحت کے حکام نے اب تک تقریباً 1,000 مونکی پوکس کیسز ریکارڈ کیے ہیں۔ ڈبلیو ایچ او نے پہلے بتایا تھا کہ یورپ اور امریکہ میں بندر پاکس کے کیسز بڑے پیمانے پر رپورٹ ہوئے ہیں۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔