وزیراعظم عمران نے ٹرمپ سے ملاقات کی، ڈبلیو بی کے حکام کے ساتھ بات چیت کی

وزیر اعظم عمران خان پیر کے روز پاکستان آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ مل کر امریکی صدر ڈونلڈ ٹمپ سے ملاقات کریں گے، اور اس کے بعد بین الاقوامی مالیاتی فنڈ اور عالمی بینک کے اعلی حکام کے ساتھ بات چیت کرے گی.

خان ٹرمپ اجلاس میں دونوں ممالک کے درمیان مختلف علاقوں میں تعلقات کو فروغ دینے پر توجہ مرکوز کرے گا.

واشنگٹن میں پاکستان کے سفارت خانے میں خطاب کرتے ہوئے، انٹر سروس سروس پبلک ریلیشنز اور آرمی کے ترجمان کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے تصدیق کی کہ جنرل باجوہ وائٹ ہاؤس میں ٹرمپ کے ساتھ ملاقات کے دوران وزیراعظم عمران کے ساتھ ملیں گے.

میجر جنرل غفور نے میڈیا کو بتایا کہ آرمی چیف پاکستان کے ریڈیو کے مطابق، امریکی فوجی قیادت کے ساتھ بات چیت کرنے کے لئے پنٹاگون سے بھی ملاقات کرے گا.

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی اندرونی سلامتی کی صورتحال بہت بہتر تھی اور ملک کی قربانیوں اور ساتھ ساتھ سیکورٹی فورسز کے نتائج بھی پیدا ہوئے تھے. ترجمان نے بتایا کہ سرحدی کنٹرول بھی پاکستان اور افغانستان سرحد پر اٹھائے گئے سیکورٹی باڑ کے بعد بھی بہتر ہوا تھا، انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردی کے واقعات کو کم کرنے میں مدد ملے گی.

ایک سرکاری پریس ریلیز کے مطابق، وزیراعظم عمران نے پاکستانی کاروباری برادری سے بھی ملاقات کی، جس میں ایک ممتاز پاکستانی صحافی جاوید انور، جو ممکنہ سرمایہ کاروں کے ایک گروپ کے ساتھ مل کر واشنگٹن میں پاکستانی سفیر میں ملاقات کی.

اس سے پہلے، وائٹ ہاؤس نے کہا تھا کہ وزیر اعظم کا دورہ دونوں ممالک کے درمیان امن کو فروغ دینے، امن، استحکام اور معاشی خوشحالی کو خطے میں بہت زیادہ تنازعات کے لۓ تعاون کو مضبوط بنانے پر توجہ دے گا. ٹامپ کی انتظامیہ نے یہ بات بتائی ہے کہ دورے کے دورے کے دوران دونوں ممالک کے درمیان تعلقات بہتر بنانے میں کامیاب ہوسکتی ہے.

ثاقب شیخ۔