جعلی اکاؤنٹس کیس: فریال تالپور اڈیالہ جیل منتقل

Faryal talpur

قومی احتساب بیورو کے ذریعہ تحقیقات کیے جانے والے جعلی اکاؤنٹس کیس میں نامزد پی پی پی رہنما فریال تالپور کو پیر کی درمیانی شب اسلام آباد کے پولی کلینک اسپتال سے اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا۔

اس سے قبل پولی کلینک کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر شعیب خان نے ڈان کو بتایا تھا کہ تالپور صحت یاب ہو رہے ہیں اور انہیں اتوار کو چھٹی مل سکتی ہے جس کے بعد انہیں اڈیالہ جیل منتقل کردیا جائے گا۔

جب نیب حکام اسے جیل لے جانے کے لئے اسپتال پہنچے تو اسپتال کے ڈاکٹروں نے ان کی منتقلی کے خلاف مشورہ دیا اور کہا کہ انہیں مزید دل کے علاج کی ضرورت ہے۔ اسپتال میں صورتحال کشیدہ ہو گئی جب نیب حکام نے اسے اڈیالہ جیل منتقل کرنے پر اصرار کیا جبکہ ڈاکٹروں نے ان کے تبادلے کو روکنے کی کوشش کی۔

تالپور ، جو پی پی پی کے شریک چیئر پرسن آصف علی زرداری کی بہن ہیں ، نے انسداد بدعنوانی کے نگران پر اس وقت شدید تنقید کی جب اس کے عہدیداروں نے انہیں اسلام آباد کے پولی کلینک اسپتال سے جیل لے جایا اور ان کے اقدامات کو “غیر قانونی” قرار دیا۔

نیب کی جانب سے تالپور کو جمعہ کے روز پولی کلینک لایا گیا تھا۔ اسلام آباد کے چیف کمشنر نے ان کے وارڈ کو ایک ’سب جیل‘ قرار دے دیا اور بالترتیب وارڈ میں اور اسپتال کے باہر نیب کے عہدیدار اور پولیس کو تعینات کیا گیا۔ تالپور کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا تھا اور انہیں اسپتال سے فارغ ہونے کے بعد ایک بار اڈیالہ واپس لے جانا تھا۔

Share on facebook
Share on twitter
Share on linkedin
cropped-urdu_khabar_logo.png

ہمارے نیوز لیٹر میں شامل ہوں۔

تازہ ترین مضامین، نوکریاں، مفت، تفریحی خبریں براہ راست اپنے ان باکس میں حاصل کریں۔

170000 سبسکرائبرز یہاں ہیں۔