1 ہفتے میں 18 اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ

وفاقی ادارہ برائے شماریات نے اس ہفتہ میں ہونے والی مہنگائی کی رپورٹ جاری کر دی ہے جس کے مطابق حالیہ ہفتے میں 18 اشیائے ضرورت کی قیمتوں میں اضافہ ہوا جبکہ 11 اشیاء کی قیمتوں میں کمی بھی دیکھنے کو آئی ہے۔ مزید یہ کہ حالیہ ہفتے میں مہنگائی کی شرح 0۰98 فیصد رہی ہے۔

اسلام آباد سے وفاقی ادارہ برائے شماریات کی جانب سے جاری ہونے والی اس رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں چینی کی قیمتوں میں اضافے کا سلسلہ اب بھی جاری یے۔ جس کا واضح ثبوت ایک ہفتے کے دوران چینی کی قیمت میں فی کلو کے حساب سے 2 روہے 15 پیسے کا بڑا اضافہ ہے۔ چینی کی قیمت میں حالیہ ہفتے میں ہونے والے اضافے کے بعد فی کلو چینی کی قیمت 80 روپے 82 پیسے سے برھ کر 82 روپے 96 پیسے ہو گئی ہے۔

رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ گزشتہ ہفتے چینی کی قیمتوں میں فی کلو کے حساب سے 24 پیسے اضافہ ہوا تھا۔

رواں ہفتے ٹماٹر کی قیمتوں بھی فی کلو کے حساب سے 29 روہے تک بڑھ چکی ہیں جس کے بعد ٹماٹر کی قیمت 96 روہے 50 پیسے ہو چکی ہے۔ اس کے علاوہ ادارے کی رپورٹ کے مطابق پیاز 4 روہے فی کلو جبکہ سرخ مرچ 200 گرام کے لحاظ سے 16 روہے مہنگی ہوئی ہے۔

مزید برآں ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق رواں ہفتے میں انڈے فی درجن کے حساب سے 4 روپے مہنگے ہوئے جبکہ اس کے علاوہ دیگر اشائے ضروریہ چکن، بڑا گوشت، چھوٹا گوشت، تازہ دودھ، چاول، گڑ اور چنے کی دال کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

اس کے علاوہ اس ایک ہفتے کے دوران 11 اشیاء کی قیمتوں میں کمی بھی آئی ہے جن میں دال مونگ 10 روہے کلو اور کیلے 5 روپے فی درجن کے حساب سے سستے ہوئے ہیں۔

اسی طرح 20 کلو آٹے کا تھیلا 6 روہے، ایل پہ جی سلنڈر 6 روہے اور دال ماش، گھی نیز لہسن کی قیمتوں میں بھی کمی دیکھنے کو آئی ہے۔ اس ایک ہفتے کے دوران 22 اشیاء کی قیمتوں میں کسی قسم کا اضافہ یا کمی نہیں ہوئی ہے۔

اسٹاف رائٹر