گوگل کی 15 ہزار پاکستانیوں کے لئے سکالر شپس

گوگل کی پاکستانیوں کو 15 ہزار سالانہ اسکالرشپس کی پیشکش

ایک مقامی اشاعت کے مطابق، امریکہ میں مقیم عالمی آئی ٹی کارپوریشن گوگل نے پاکستان کے قابل نوجوانوں کو 15 ہزار سالانہ اسکالرشپس کی پیشکش کی ہے تاکہ ملک کے انتہائی امید افزا آئی ٹی سیکٹر میں انقلاب برپا کیا جا سکے۔ 

 سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) کے رکن سینیٹر ڈاکٹر افنان اللہ خان کے مطابق امریکی ٹیک کمپنی پاکستان میں 3.5 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہے۔

اسی طرح، انہوں نے کہا کہ 5جی لائسنسوں کی فروخت سے اربوں ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہوگا جبکہ نجی شعبے میں اہم وینچر کیپیٹل سرمایہ کاری کو بھی راغب کیا جائے گا۔ 

 سینیٹر نے دعویٰ کیا کہ پاکستان کی آئی ٹی برآمدات صرف تھوڑی سی منصوبہ بندی سے اگلے چند سالوں میں باآسانی 10 بلین ڈالر تک پہنچ سکتی ہیں۔

0.1 فیصد شرح سود کے ساتھ 1 بلین ڈالر قرض کی فراہمی

 انہوں نے یہ بھی کہا کہ جنوبی کوریا نے پاکستان کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے کو 0.1 فیصد شرح سود کے ساتھ 1 بلین ڈالر قرض فراہم کیا ہے۔ 

 پاکستان اپنے آپ کو ایک علاقائی آئی ٹی طاقت کے طور پر تیزی سے قائم کرنے کے لیے آئی ٹی سے متعلق مختلف موضوعات پر توجہ دے سکتا ہے۔ 

سینیٹر نے مزید کہا کہ وہ ملک کی آئی ٹی انڈسٹری میں انقلاب لانے کے لیے انفرادی طور پر اور حکومت کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں |  واٹس ایپ کن آئی فون ڈیوائسز پر 24 اکتوبر سے کام نہیں کرے گا؟ جانئے 

یہ بھی پڑھیں | واٹس ایپ آن لائن سٹیٹس کیسے چھپائیں؟ جانئے 

میں انفارمیشن ٹیکنالوجی میں اپنی جدید تربیت کو قوم کی بھلائی کے لیے استعمال کرنا چاہتا ہوں۔

سینیٹر خان نے کروڑوں ڈالر کے آئی ٹی منصوبے مکمل کیے ہیں اور آکسفورڈ یونیورسٹی سے انفارمیشن ٹیکنالوجی میں پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی ہے۔ 

ن لیگ کی قیادت پاکستانیوں کو درپیش مسائل سے آگاہ ہے

 انہوں نے دعویٰ کیا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی قیادت پاکستانیوں کو درپیش مسائل سے آگاہ ہے اور ملک کی آئی ٹی انڈسٹری میں مزید ترقی کی خواہش رکھتی ہے کیونکہ دیگر صنعتوں کے برعکس آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کا بہت تیزی سے نتیجہ نکلا۔

 انہوں نے دعویٰ کیا کہ ایک اہم اقدام جو اب جاری ہے اس میں جاپان جیسے ملک میں آئی ٹی اہلکاروں کی برآمد شامل ہے۔ 

لہذا غیر ملکی سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے لیے حکومت کی توجہ اس شعبے پر بڑھانے کے لیے ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔