کوویڈ۱۹: کراچی میں مثبت کیسز کی شرح 21 فیصد سے تجاوز کر گئی

پاکستان بھر میں کووِڈ19 کیسز دوبارہ بڑھ رہے ہیں

پاکستان بھر میں کووِڈ19 کیسز دوبارہ بڑھ رہے ہیں۔ ملک کے مالیاتی دارالحکومت کراچی میں مثبتیت کی شرح جمعرات کو 21 فیصد سے تجاوز کر گئی ہے۔

 نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 16 جون کو میٹروپولیس میں 53 افراد نے وائرس کے لیے مثبت تجربہ کیا۔ تاہم، کیسز کی تعداد ایک ہفتے کے اندر دگنی سے بھی زیادہ ہو گئی کیونکہ 22 جون (بدھ) کو شہر میں 138 افراد نے مثبت تجربہ کیا تھا۔

کراچی میں ملک بھر سے سب سے زیادہ کوویڈ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں

 این سی او سی کے مطابق، کراچی میں ملک بھر سے سب سے زیادہ کوویڈ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، جبکہ دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ کیسز ایبٹ آباد میں ریکارڈ کیے گئے جہاں مثبتیت 8.7 فیصد تھی۔ دوسرے شہروں میں جن میں انفیکشن کی شرح 2 فیصد سے زیادہ بتائی گئی ہے ان میں اسلام آباد، پشاور، فیصل آباد اور آزاد جموں و کشمیر کا میرپور شامل ہیں۔ 

 مجموعی طور پر، ملک میں جمعرات کو 268 نئے کووِڈ کیسز کا پتہ چلا ہے اور ملک بھر میں مثبتیت کی شرح 2.14 فیصد رہی ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں ایک شخص وائرس سے زندگی کی بازی ہار گیا۔ 

یہ بھی پڑھیں | عدالتی حکم: عامر لیاقت کے جسد خاکی کا پوسٹ مارٹم 23 جون کو شیڈیول  

یہ بھی پڑھیں | بریکنگ: ڈالر کے مقابلے میں روپیہ 207 کا ہو گیا    

 این سی او سی اجلاس

 کل این سی او سی کے اجلاس میں، یہ نوٹ کیا گیا کہ اہل آبادی میں سے 85 فیصد کو مکمل طور پر ویکسین لگائی جا چکی ہے اور 93 فیصد کو جزوی طور پر ویکسین لگائی جا چکی ہے۔ اس کے علاوہ، سندھ میں 100 فیصد اہل آبادی کو مکمل طور پر حفاظتی ٹیکے لگائے گئے تھے۔ 

اجلاس، جس کی صدارت وفاقی وزیر برائے نیشنل ہیلتھ سروسز عبدالقادر پٹیل نے اسلام آباد میں کی، نے تمام صوبوں اور علاقوں کو مشورہ دیا کہ وہ کووڈ ٹرانسمیشن کے خلاف تحفظ کو مزید بہتر بنانے کے لیے ترجیحی بنیادوں پر بوسٹر ڈوز کا انتظام کریں۔ 

 عالمی وبائی صورتحال کے پیش نظر، سینٹرل ہیلتھ اسٹیبلشمنٹ کو داخلے کے مقامات پر آنے والے مسافروں کی صحت کی حالت کی سختی سے نگرانی کرنی چاہیے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔