مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

کراچی میں پاکستان کے سب سے بڑے ویکسی نیشن سینٹر کا افتتاح

سندھ کے وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے اتوار کے روز کراچی کے ایکسپو سنٹر میں پاکستان کے سب سے بڑے ویکسی نیشن سنٹر کا افتتاح کیا ہے۔

 اس میں روزانہ 30،000 لوگوں کو ویکسن لگانے کی گنجائش ہے اور یہ 24 گھنٹے کھلے رہیں گے۔

 ایکسپو سنٹر کراچی میں 12 بلاک کے ساتھ رجسٹریشن کے 12 کاؤنٹر ہیں جن میں 96 کیوبکلس شامل ہیں۔ مرکز میں ہر شفٹ میں کوویڈ19 ویکسین لگانے کے لئے 360 صحت کارکن ہوں گے۔ 

ڈاکٹر پیچھو نے کہا ہے کہ چونکہ مشرقی کراچی میں اس شہر میں سب سے زیادہ انفیکشن دیکھنے میں آئے ہیں ، یہاں رہنے والے لوگوں کو ایکسپو سنٹر ویکسینیشن کی سہولت سے فائدہ اٹھانے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

 افتتاحی موقع پر نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے عہدیداران ، پارلیمانی سکریٹری قاسم سومرو اور سندھ کے سیکریٹری صحت ڈاکٹر کاظم جتوئی نے بھی شرکت کی۔

یہ بھی پڑھیں | لاہور ہائیکورٹ کی اجازت کے باوجود شہباز شریف بیرون ملک نا جا سکے

 محکمہ صحت نے ایک بیان میں کہا کہ پولیو مہموں کو پورے صوبے میں بڑھایا جائے گا اور اس میں حفاظتی ٹیکوں کے مراکز میں اضافہ اور ہر برادری اور آبادیاتی افراد کے لئے آسانی سے رسائی شامل ہوگی۔ 

محکمہ نے مزید کہا کہ 16 مئی کے بعد ، کوویڈ 19 کے 40 سال سے کم عمر افراد کے لئے بھی مراکز کھلیں گے۔ چار مئی کو ، این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے کہا تھا کہ عید کے بعد 18 سال سے زیادہ عمر کے سب افراد کے لئے کورونا وائرس ویکسین شروع ہوجائیں گی۔

 ڈاکٹر پیچوہو نے کہا کہ ہم وفاقی حکومت کو رقم دینے کے لئے تیار ہیں تاکہ وہ مقررہ قیمتوں کے ذریعے ویکسین خریدیں اور انہیں سندھ کو فراہم کریں۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ہم مناسب تعداد میں ویکسینوں کی جلد خریداری کے خواہاں ہیں تاکہ ہم زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویکسن لگائیں۔ 

این سی او سی نے اعلان کیا تھا کہ وہ اس سال کے آخر تک تمام پاکستان کے لئے ویکسین کی 70 ملین خوراکیں خریدے گی۔ وزیر صحت سندھ نے کہا کہ اگر ویکسین کے اندراج کے بارے میں کوئی الجھن ہے تو ، براہ کرم ہمارے ویکسی نیشن مراکز کا رخ کریں جہاں عملہ کا ایک تربیت یافتہ ممبر آپ کو ویکسین لگائے گا۔ 

سندھ میں سینووک ، کینسینو ، ایسٹرازینیکا اور سینوفرم ویکسین مفت فراہم کی جارہی ہے۔ وزیر صحت سندھ نے درخواست کی کہ عوام کو ایس او پیز کی پیروی کرنے میں کچھ ذمہ داری لینی چاہئے کیونکہ اس کوتاہی نے انفیکشن میں بہت زیادہ اضافہ کیا ہے۔ 

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔