مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

کراچی میں رش کو کم کرنے کے لئے گیارہ کوویڈ19 سینٹرز متعارف

سندھ حکومت نے اتوار کے روز کراچی کے چھ اضلاع میں 11 کوویڈ 19 ویکسینیشن مراکز کو “بڑے پیمانے پر ویکسینیشن کی سہولیات” قرار دیا ہے جبکہ دو میگا ویکسینیشن پوائنٹس-ایکسپو سینٹر اور خالقدینہ ہال  زیادہ ہجوم کو روکنے کے لیے ہفتے بھر چوبیس گھنٹے کام کریں گے۔

 ایکسپو سینٹر اور خالقدینہ ہال ویکسینیشن سینٹرز میں اتوار کے روز مسلسل دوسرے دن لوگوں کی بڑی تعداد  ویکسین لگوانے آئی۔ بڑے پیمانے پر ویکسینیشن مراکز مندرجہ ذیل مقامات پر ہوں گے۔

 مشرقی ضلع کے ڈاؤ اوجھا ہسپتال ،خلیق الدین ہال ، جے پی ایم سی اور جنوبی ضلع لیاری جنرل ہسپتال چلڈرن ہسپتال ، ایس جی ہسپتال نیو کراچی ، وسطی ضلع میں ایس جی ہسپتال لیاقت آباد۔ مغربی ضلع میں سندھ گورنمنٹ قطر ہسپتال ضلع ملیر میں ایس جی ہسپتال مراد میمن گوٹھ۔ کورنگی ضلع میں بالترتیب ایس جی ہسپتال سعود آباد۔

یہ بھی پڑھیں | بیوی کے مقابلے میں حسین کی حالت زیادہ ہونی چاہیے ، صداف کنول کے بیان پر مختلف تبصرے

 پولیس کے مطابق ، اولڈ سٹی ایریا ، لیاری اور کراچی کے مضافات میں کچھ ویکسینیشن مراکز میں بدامنی اور افراتفری کے دو واقعات رپورٹ ہوئے ہیں۔ 

چاکیواڑہ تھانے کے اسٹیشن ہاؤس آفیسر عبدالغفار شاہ نے بتایا کہ لیاری جنرل ہسپتال میں ہاتھا پائی ہوئی جہاں اتوار کو ویکسی نیشن کے لیے بہت بڑا ہجوم جمع ہوا تھا۔

 افسر کے مطابق اس واقعے میں زائرین اور علاقے کے بڑے ہسپتال کا سیکیورٹی عملہ شامل تھا۔ انہوں نے کہا کہ صورتحال کو مزید خراب ہونے سے روکنے کے لیے پولیس نے فوری مداخلت کی۔ تاہم ایس ایچ او نے ان خبروں کی تردید کی کہ پولیس نے وہاں پہنچنے والے مکینوں پر لاٹھی چارج کیا۔

 انہوں نے واضح کیا کہ کچھ لوگ جو سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ایک ویڈیو میں لوگوں کو لاٹھیوں سے مارتے ہوئے دکھائی دے رہے تھے وہ ہسپتال کے “سیکورٹی گارڈ” تھے نہ کہ پولیس اہلکار۔ 

انہوں نے تصدیق کی کہ گڈاپ کے علاقے میں ایک ویکسینیشن سینٹر سے ایک اور واقعہ کی اطلاع ملی ہے جہاں لوگوں نے مبینہ طور پر ویکسین کے اسٹاک ختم ہونے کے بعد احتجاج کیا۔

 وزیراعلیٰ سندھ کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے ہفتے کے روز کہا کہ صوبائی حکومت نے لوگوں کو کوویڈ کے خلاف ویکسین لگانے پر آمادہ کرنے کے لیے ایک ’’ حربہ ‘‘ استعمال کیا اور اس سلسلے میں ویکسن نا لگوانے والے لوگوں کی موبائل سمیں بلاک کرنے کا فیصلہ کیا۔ 

انہوں نے کہا کہ اعلان کے چار دن بعد ویکسینیشن کا تناسب تیزی سے بڑھ گیا ہے۔ 

 دریں اثنا ، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کراچی بھر کے ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے اپنے اضلاع میں ویکسینیشن کے مزید مراکز قائم کریں جبکہ مساجد اور امام بارگاہوں میں بھی ویکسن سہولیات قائم کی جا رہی ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔