چین نے امریکہ کو پیچھے چھوڑ دیا؛ امیر ترین ملک بن گیا

 چین چین

ایک نئی تحقیقی رپورٹ

کے مطابق چین امریکہ کو پیچھے چھوڑ کر دنیا کا امیر ترین ملک بن گیا ہے۔

 ایم-سی-کنسے اینڈ کو کے ریسرچ ونگ کی طرف سے جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ دو دہائیوں کے دوران عالمی دولت تین گنا بڑھ گئی ہے جو کہ سال 2000 میں 156 ٹریلین ڈالر سے 2020 میں 514 ٹریلین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

 جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق، عالمی دولت میں حیران کن اضافے کا تقریباً ایک تہائی حصہ چین کا ہے۔ ملک کی دولت 2000 میں 7 ٹریلین ڈالر سے بڑھ کر 2020 میں 120 ٹریلین ڈالر ہوگئی ہے۔ اعداد و شمار میں ملک کے ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن (ڈبلیو ٹی او) کا رکن بننے سے پہلے کے ایک سال کے عرصے کا پتہ چلتا ہے جس نے اس کی معیشت کے عروج کو تیز کر دیا ہے۔ 

رپورٹ میں 10 ممالک کی قومی بیلنس شیٹس کا تجزیہ کیا گیا جو کہ دنیا کی آمدنی کا 60 فیصد سے زیادہ ہیں۔ رپورٹ میں چین اور امریکا کے علاوہ جرمنی، فرانس، برطانیہ، جاپان، سویڈن، میکسیکو، کینیڈا اور آسٹریلیا شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں | پاکستانیوں کو جلد عمرے کی ادائیگی کی اجازت کی توقع   

 جہاں تک امریکہ کا تعلق ہے، دو دہائیوں میں ملک کی مجموعی مالیت تقریباً 90 ٹریلین ڈالر تک بڑھ گئی ہے۔ امریکہ اور چین، دو سب سے بڑی عالمی معیشتیں ہیں، کی دو تہائی سے زیادہ دولت صرف 10 فیصد امیر ترین گھرانوں میں مرکوز ہے۔ رپورٹ کے مطابق، عالمی مجموعی مالیت کا تقریباً 68 فیصد رئیل اسٹیٹ میں محفوظ ہے۔

جائیداد کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے خالص مالیت میں اضافہ ہوا ہے۔ حقیقی ریاست کی قیمتوں میں اضافے سے مالیاتی بحران کا خطرہ بڑھ سکتا ہے جیسا کہ 2008 میں امریکی ہاؤسنگ بلبلا پھٹنے کے بعد ہوا تھا۔ 

خبروں کے مطابق چینی پراپرٹی ڈویلپرز جیسا کہ ایورگرینڈ گروپ کا قرض ملک کو اسی طرح کے بحران کی طرف لے جا سکتا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

cropped-urdu_khabar_logo.png

ہمارے نیوز لیٹر میں شامل ہوں۔

تازہ ترین مضامین، نوکریاں، مفت، تفریحی خبریں براہ راست اپنے ان باکس میں حاصل کریں۔

170000 سبسکرائبرز یہاں ہیں۔