مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

پیٹرول مزید مہنگا ، عوام پہ ایک اور بم گرا دیا گیا

حکومت نے بدھ کے روز پٹرول کی قیمت میں 5 روپے اضافہ کیا ہے۔ 

فنانس ڈویژن کے نوٹیفکیشن کے مطابق یہ اضافہ بین الاقوامی مارکیٹ میں پٹرولیم کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ اور ایکسچینج ریٹ کی تبدیلی کی وجہ سے کیا گیا ہے۔

 نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول کے علاوہ دیگر پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ بھی 16 ستمبر سے نافذ کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں | روپیہ دو سال کی بلند ترین قیمت پر آ گیا  

 پٹرول 5 روپے اضافے کے ساتھ اب 123.30 روپے فی لیٹر جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل 5.01 روپے اضافے کے ساتھ اب 120.04 روپے فی لیٹر مہنگا ہوگا۔ 

مزید برآں ، مٹی کا تیل 5.46 روپے مزید مہنگا ہوگا اور اس طرح اس کی قیمت 96.26 روپے فی لیٹر ہوگی جبکہ لائٹ ڈیزل آئل 5.92 روپے مہنگا ہوکر 90.69 روپے فی لیٹر مہنگا ہوگا۔ 

آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے پٹرول کی قیمت میں 1 روپے فی لیٹر اضافے کی سفارش کی تھی۔ اتھارٹی نے پٹرولیم ڈویژن کو ایک سمری ارسال کی جس میں اس نے پٹرول کی قیمت میں 16 روپے فی لیٹر اضافے کی تجویز دی تھی۔

 اس نے ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 10.50 روپے فی لیٹر اضافے اور مٹی کے تیل کی قیمت میں 5 روپے فی لیٹر اضافے کی بھی سفارش کی۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔