پنجاب میں خفیہ ایجنسی کے دو اہلکار قتل

پاکستان کی خفیہ ایجنسی کے دو اہلکار شہید

پولیس اور سیکیورٹی حکام نے بتایا ہے کہ مسلح شخص نے پنجاب میں سڑک کے کنارے ایک ریستوران کے باہر پاکستان کی خفیہ ایجنسی کے دو اہلکاروں کو گولی مار کر شہید کر دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق صوبہ پنجاب کے ضلع خانیوال کے ایک سینئر پولیس افسر مرتضیٰ بھٹی نے بتایا کہ گزشتہ روز منگل کو حملہ اس وقت ہوا جب دونوں اہلکار اپنی گاڑی پارک کر رہے تھے۔

جاں بحق کرنے کی ذمہ داری

افسران کو جاں بحق کرنے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی

یہ بھی پڑھیں | راولپنڈی، اسلام آباد میں آٹے کی قیمتوں میں اضافہ

یہ بھی پڑھیں | نئے سال کی آمد پر اسلام آباد میں اہم مقامات بند کرنے کا فیصلہ

ابھی تک کسی نے ان افسران کو جاں بحق کرنے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے تاہم یہ اہلکار پاکستانی طالبان اور دیگر مسلح گروپوں کے ارکان کو گرفتار کرنے کے لیے جانے جاتے تھے۔

حملوں سمیت پیچیدہ مقدمات کی تفتیش

 یہ افراد پاکستان میں بم حملوں سمیت پیچیدہ مقدمات کی تفتیش اور حل کرنے میں اپنی مہارت کے لیے بھی جانے جاتے تھے۔ 

حکام نے بتایا کہ مقتول اہلکاروں میں سے ایک صوبائی محکمہ انسداد دہشت گردی کا ڈائریکٹر تھا جس نے تحریک طالبان پاکستان کے ارکان کی گرفتاری میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

ثاقب شیخ

ثاقب شیخ فاؤنڈیشن فار ڈیفنس آف ڈیموکریسیز کے ایک ریسرچ فیلو ہیں، جو واشنگٹن میں قائم، قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی پر توجہ مرکوز کرنے والا غیر جانبدارانہ تحقیقی ادارہ ہے۔