پاکستانی روپیہ ایشیاء کی 3 بہترین پرفارم کرنے والی کرنسیز میں شامل، رپورٹ

نجی نیوز کی خبر کے مطابق ، امریکی ڈالر کے مقابلے میں ساڑھے چھ ماہ کی بلند ترین سطح 158.9 تک پہنچنے پر ، پاکستانی روپیہ ایشیا کی تیسری بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی کرنسی بن گیا ہے۔

 گذشتہ سیشن میں ، بین بینک مارکیٹ میں روپیہ 159.09 پر بند ہوا جبکہ سیشن کے دوران ڈالر کے مقابلے میں 18 پیسے کی قدر میں اوپن مارکیٹ میں ڈالر کے مقابلہ میں یہ 30 پیسے اضافے کے ساتھ 158.8 پر طے ہوا اور یہ 169 کی کم سے 10.2 یا 5 فیصد اضافے پر بھی ہے۔ 

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ روپیہ یکم اکتوبر سے امریکی ڈالر کے مقابلے میں 3.1 فیصد کی قدر کرتے ہوئے ایشیاء میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی کرنسیوں کی فہرست میں داخل ہوگیا ہے۔ اس طرح انڈونیشیا میں روپیہ اور جنوبی کوریائی کی جیت کے بعد ایشیاء میں تیسری بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی کرنسی کی پوزیشن حاصل ہوگئی ہے۔

 انڈونیشیا کی کرنسی میں 4.5 فیصد کا اضافہ ہوا جبکہ جیت میں 3.6 فیصد اضافہ ہوا۔ 26 اگست سے ، پاکستانی روپے میں 9.52 روپے یا 5.6 ​​فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | کیا قطر کورونا وائرس کیسز کے اعداد و شمار چھپا رہا ہے؟جانئے مکمل حقائق

 ڈیلرز نے بتایا ہے کہ کرنسی کی قیمت میں اضافے کا سلسلہ جاری ہے اور گرین بیک کے مقابلے میں اس کی قیمت میں اضافہ جاری ہے۔ درآمد کنندگان سے ڈالر کا مطالبہ مارکیٹ میں دب کر رہ گیا ہے۔ ایک کرنسی ڈیلر نے کہا کہ معمول کے مطابقادائیگی ہوتی رہی ہے جبکہ گذشتہ دنوں برآمد کنندگان کے ذریعہ فارورڈ ڈالر کی فروخت میں اضافہ ہوا۔ 

ڈیلرز نے یہ بھی کہا کہ مرکزی بینک تبادلہ کی شرح میں مستقل تعریف کو روکنے کے لئے مداخلت نہیں کررہا ہے۔ زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے ، مضبوط ترسیلات زر ، ادائیگی کی پوزیشن میں توازن میں بہتری اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی آمد میں اضافے نے روپے کی قدر کو مستحکم کرنے میں مدد فراہم کی ہے۔

  ایک ڈیلر نے کہا کہ ہم توقع کر رہے ہیں کہ اگلے دو تجارتی سیشنوں کے دوران روپیہ ڈالر کے مقابلہ میں 157 سطح کے ارد گرد تجارت کرے گا۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ پاکستانی روپیہ / امریکی ڈالر کی برابری میں کمی سے بیرونی قرضوں کے ساتھ ساتھ ملک میں درآمدی افراط زر پر بھی دباؤ کم ہوتا ہے۔ 

ایک تجزیہ نگار نے کہا ہے کہ حالیہ دنوں میں روپے کی قدر کے پیچھے بہت ساری وجوہات ہیں۔ ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے کے دوران اسٹیٹ بینک آف پاکستان ملکی کرنسی کی حمایت کے لئے ڈالر فروخت نہیں کررہا ہے۔ 

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *