مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

وزیر اعظم عمران کا لاہور میں میاواکی شہری جنگلات کے منصوبے کا افتتاح

وزیر اعظم عمران خان نے جمعہ کے روز کہا ہے کہ لاہور میں ہر سال فوگ صحت عامہ اور معیار زندگی کے لئے ایک  خطرہ ہے اور حکومت اب ماحولیاتی نظرانداز کو ختم کرنے کی کوشش کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نے اسپرنگ پلانٹشن 2021 کی افتتاحی تقریب سے خطاب کیا جس کو جیلانی پارک سے نکال دیا گیا ہے اور بالآخر وہ لاہور میں میاوکی شہری جنگلات کے لئے 51 مقامات کے پودے لگانے کے کام آئے گا۔

یہ بھی پڑھیں | پاکستان کے مختلف شہروں میں 6 اشاریہ 4 کی شدت کا زلزلہ

وزیر اعظم نے کہا ہے کہ پچھلے 12سے 13 سالوں میں لاہور کے جنگل کے احاطہ میں 70 فیصد کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے اب لاہور کو خاص طور پر فروری کے مہینے کے دوران اسموگ کے مسئلے کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

  یہ اوسط عمر کو 6 سے11 سال کم کر دیتا ہے۔ وزیر اعظم نے اسے ایک “خاموش قاتل” قرار دیتے ہوئے کہا کہ لوگ سموگ کے وجود کو نظرانداز کرتے ہیں کیونکہ اس سے ہونے والے نقصان کو فوری طور پر دیکھا نہیں جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے صحت کو ایک سنگین خطرہ لاحق ہے کیونکہ اسموگ میں موجود کیمیکل بچوں اور بوڑھوں کے پھیپھڑوں اور دماغ کو متاثر کرتے ہیں جس کے سنگین نتائج برآمد ہوتے ہیں۔ 

انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر کی گئی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ آپ معاشرے پر اسموگ کے طویل مدتی اثرات کی توثیق نہیں کرسکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اب لاہور کی شہری ترقی کے دوران ماحولیاتی نظراندازی کے اثرات کو ختم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو اس سلسلے میں بہت ساری کوششیں کرنا ہوں گی اور انہوں نے میاوکی شہری جنگلات کے منصوبے کے لئے 51 مقامات کے انتخاب کو  پہلا قدم قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کا خاص فائدہ50 سال کی بجائے دس سے 20 سال رفتار میں ہے جس میں جنگلات کاشت کی جاسکتی ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔