وزیر اعظم عمران اگلے ہفتے ملائشیا کا دورہ کریں گے.

اسلام آباد: توقع ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اگلے ہفتے ملائیشیا کا سفر کریں گے جس میں حکومت کی “ڈیمز کنٹرول” کی کوششوں کے تحت پاکستان نے پچھلے سال دسمبر میں کوالالمپور سمٹ سے دستبرداری اختیار کی تھی۔

سرکاری ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ وزیر اعظم کا 3 سے فروری کو سرکاری دورے پر کوالالمپور کا سفر ہونا ہے۔

یہ دورہ اس لئے کیا گیا تھا جب سعودی عرب اور دوسرے عرب ممالک نے میزبان ملیشیا ، ترکی ، ایران اور قطر کے رہنماؤں کے اجتماع پر اپنے تحفظات کے اظہار کے بعد آخری لمحے میں اسلام آباد کوالالمپور سمٹ سے باہر نکالا تھا۔
سعودی عرب نے اس سربراہی کانفرنس کو کچھ مسلم ممالک کی طرف سے ایک نیا اسلامی بلاک بنانے کی کوششوں کے طور پر دیکھا۔ ملائشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد نے تاہم اس طرح کی خبروں کو مسترد کردیا۔

ابتدائی طور پر دعوت قبول کرنے والے پاکستان کو عالم اسلام کے اندر اپنی ’غیر جانبدار پوزیشن‘ برقرار رکھنے کے لئے اس بنیاد پر سربراہی اجلاس سے دستبردار ہونا پڑا۔

اس کے باوجود وزیر اعظم نے اپنے ملائشیا کے ہم منصب سے فون پر بات کی اور اجلاس کے بعد انہیں دورہ کرنے کی پیش کش کی۔

یہ واضح ہے کہ وزیر اعظم عمران اس دورے کو یہ بتانے کے لئے استعمال کریں گے کہ پاکستان نے سربراہ اجلاس سے کیوں نکالا۔

پاکستان ترکی تک پہنچنے کے لئے بھی کوششیں کر رہا ہے۔ سرکاری حلقوں کو یقین ہے کہ فروری میں ترک صدر رجب طیب اردگان کا دورہ دونوں ممالک کے مابین کسی عدم اعتماد کو دور کرنے میں مددگار ثابت ہوگا۔

پاکسیدیلی سے متعلق مزید خبریں پڑھیں: https://urdukhabar.com.pk/category/national/

ثاقب شیخ۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں