مہنگائی: کے الیکٹرک صارفین کے لئے 2 روپے 90 پیسے فی یونٹ اضافہ

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے منگل کو کے الیکٹرک (کے ای) کی جنوری کے لیے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔

 درخواست میں ماہانہ فیول لاگت ایڈجسٹمنٹ کے حساب سے 3.40 فی یونٹ اضافے کی درخواست کی گئی تھی۔

 اس حوالے سے سماعت چیئرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی کی زیر صدارت تمام اتھارٹی کے ارکان کے ہمراہ ہوئی۔ اتھارٹی نے 2 روہے 99 پیسے روپے کے اضافے کی منظوری دے دی جبکہ فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا۔ 

اس اضافے کا روپے پر اثر پڑے گا۔

 کے ایکٹرک نے بتایا کہ کمپنی کا بن قاسم پاور پلانٹ 3 تیار ہے اور 450 میگا واٹ (میگاواٹ) کی صلاحیت والا پہلا یونٹ 7 مارچ سے بجلی کی پیداوار شروع کر دے گا۔

 کے الیکٹرک کی موجودہ پیداواری صلاحیت 1800 میگاواٹ ہے جبکہ 900 میگاواٹ بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔  کے الیکٹرک نے اتھارٹی کو یقین دلایا ہے کہ اس موسم گرما میں کے ای کی پیداوار 3800 میگاواٹ تک پہنچ جائے گی۔

 یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ جنوری کے دوران کوئلے سے چلنے والا پاور پلانٹ طے شدہ دیکھ بھال پر تھا جس کی وجہ سے جنوری میں کے ای کے وسائل سے کم بجلی پیدا کی گئی جس کے نتیجے میں بجلی کی پیداوار کے لیے فرنس آئل اور ہائی اسپیڈ ڈیزل پر زیادہ انحصار کیا گیا۔ اس کی وجہ سے کے الیکٹرک نے بجلی کے صارفین کے لیے ٹیرف میں ماہانہ ایڈجسٹمنٹ میں اضافے کی درخواست کی۔

یہ بھی پڑھیں | لگتا ہے وزیراعظم عمران خان کو پی ای سی اے آرڈیننس پر بریفنگ نہیں دی گئی، لاہور ہائی کورٹ

 یہ بھی بتایا گیا کہ ایل این جی کی درآمد میں کمی کی وجہ سے کے الیکٹرک پاور پلانٹس کو آر ایل این جی کی سپلائی کم کی گئی۔ 

 چیئرمین نیپرا نے کہا کہ گیس کے کم پریشر کا مسئلہ جلد حل نہیں ہو گا۔ نیپرا حکام کا کہنا ہے کہ گیس کی فراہمی کم ہونے کی وجہ سے صارفین کو 30 کروڑ روپے اضافی ادا کرنا ہوں گے۔

 کے الیکٹرک حکام کے مطابق سوئی سدرن کمپنی کو کے الیکٹرک کو اضافی گیس کی فراہمی کے لیے مزید سرمایہ کاری کی ضرورت ہے۔ کے ای حکام نے کہا کہ سوئی سدرن کے ساتھ بقایا جات کو جلد از جلد حل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ حکام نے مزید کہا کہ بہترین کوششوں کے باوجود سوئی سدرن گیس پریشر میں بہتری کی ضمانت نہیں دے رہی ہے۔ 

کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے نمائندوں نے کے الیکٹرک کی جانب سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور گیس کی قلت کی شکایت کی ہے۔ نیپرا کے چیئرمین نے کے ای سے کہا ہے کہ وہ صارفین کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کے لیے اپنے سسٹم کو بڑھائے۔

 وزیراعظم کی جانب سے بجلی کی قیمتوں میں کمی کے اعلان کے حوالے سے ایک سوال پر چیئرمین نیپرا نے کہا کہ عوام کو ریلیف دینا حکومت کا اختیار ہے۔ انہوں نے وزیراعظم کے اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ نیپرا کا واحد کردار حکومت کو فی یونٹ بجلی کی منصفانہ قیمت بتانا ہے اور یہ فیصلہ حکومت کو کرنا ہے کہ اسے صارفین تک پہنچانا ہے یا سبسڈی دینا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں