مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

تبصرے

    مچھ دہشتگرد حملہ، بلوچستان کے کان کنوں کو آج سپرد خاک کیا جائے گا

    اغوا کے بعد گولی کا نشانہ بننے والے گیارہ کان کنوں کو آج بلوچستان کے مچھ میں سپرد خاک کردیا جائے گا۔

     مزدوروں کے اہل خانہ مچھ سے کوئٹہ جانے والی سڑک پر کان کنوں کے قتل پر احتجاج کر رہے ہیں۔ وہ بلوچستان حکومت سے مجرموں کی گرفتاری یا استعفی دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ 

    تفصیلات کے مطابق اتوار کے روز مچھ میں نامعلوم افراد نے ان پر حملہ کیا اور کوئلے کے گیارہ کان کنوں کو گولی مار کر ہلاک کیا گیا جبکہ چار دیگر شدید زخمی ہوگئے۔ 

    پولیس نے بتایا کہ مسلح افراد کوئلے کے کان کنوں کو قریب کے پہاڑوں پر لے گئے جہاں انہوں نے ان پر فائرنگ کردی۔

     پولیس نے گیارہ افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے جبکہ زخمی ہونے والے دیگر افراد کی حالت تشویشناک ہے۔ 

    یہ بھی پڑھیں | یمن میں شادی ہال دھماکے میں 5 خواتین ہلاک ، متعدد بچے زخمی

    زخمیوں کو علاج کے لئے مچھ اسپتال لایا گیا۔ اس واقعے کی اطلاع ملنے کے بعد کوئلہ کی کان پر پولیس اور ایف سی اہلکار پہنچ گئے ہیں۔

     وزیر اعظم عمران خان نے اس واقعے کا نوٹس لیا اور اسے دہشت گردی کا ایک بزدلانہ غیر انسانی اقدام قرار دیا۔ ایک ٹویٹ میں ، وزیر اعظم نے ایف سی سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے وسائل کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے تاکہ معلوم کیا جا سکے کہ دہشت گردی کس نے کی ہے اور ان کو ختمی انجام تک پہنچایا جائے۔ 

    ہزارہ برادری کے ساتھ ساتھ دیگر سیاسی جماعتوں نے بھی کوئلے کے کان کنوں کے قتل عام پر اتوار کے روز احتجاج کا آغاز کیا ، جس سے صوبائی دارالحکومت میں متعدد سڑکیں بند ہوگئیں۔ 

    مجلس وحدت المسلمین (ایم ڈبلیو ایم) نے کوئٹہ کے مغربی بائی پاس پر دھرنا دیا ، جس میں حکومت بلوچستان سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ مچھ قتل عام کے ذمہ دار دہشت گردوں کو گرفتار کرے یا مستعفی ہوجائے۔

    جاویریہ حارث

    جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

    سبسکرائب
    کو مطلع کریں
    guest
    0 Comments
    Inline Feedbacks
    View all comments
    0
    آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
    ()
    x