مولانا طارق جمیل نے ایک بار پھر اسلاموفوبیا پر آواز اٹھانے پر عمران خان کو کریڈٹ دے دیا

معروف اسلامی مبلغ مولانا طارق جمیل نے کہا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو مصر کے حکمران کی طرف سے تحفہ ملا تو انہوں نے قبول کیا اور ایک خچر حضرت علی ابن طالب رضی اللہ عنہ نے خارجی باغیوں کے خلاف جنگ میں استعمال کیا تھا۔ 

مولانا طارق جمیل سماء ٹی وی کے شو نیوز بیٹ میں گفتگو کر رہے تھے جب میزبان پیرس جہانزیب نے ان کے حالیہ بیان کے حوالے سے سوال کیا کہ حکمرانوں کو ملنے والے تحائف ریاست کی ملکیت ہیں یا نہیں۔

یہ بھی پڑھیں | پاکستان کے آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات ، سبسڈی ختم کرنے پر اتفاق

مولانا طارق جمیل نے یہ بھی کہا کہ قومی خزانے کی حفاظت حکمران اور ریاست کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو حکمران قومی خزانے کی حفاظت میں ناکام رہتے ہیں انہیں عبرتناک سزا کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ 

 انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے بین الاقوامی پلیٹ فارمز پر توہین مذہب اور اسلاموفوبیا کے خلاف آواز اٹھائی اور بتایا کہ مسلمان اپنے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی کتنی عزت کرتے ہیں جس کا کریڈٹ عمران خان کو جاتا ہے۔ ان کو اس کا کریڈٹ نہیں دیا گیا تاہم، مولانا نے کہا کہ اگر لوگ عمران خان کو کریڈٹ دینے میں ناکام رہے ہیں، تو اللہ اسے اجر دے گا۔ 

مولانا طارق جمیل نے یہ بھی کہا کہ ہر شخص اچھی اور بری خصوصیات کا حامل ہوتا ہے لیکن 57 اسلامی ممالک میں کوئی اور ان مسائل پر آواز نہیں اٹھا سکا جن پر عمران خان نے بہادری سے آواز اٹھائی۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔