مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

مریم نواز نے آزاد کشمیر کے نتائج کو مستردکر دیا

پاکستان مسلم لیگ نواز (مسلم لیگ ن) کی نائب صدر مریم نواز نے آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی انتخابات کے نتائج کو قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے اور مکمل طور پر مستردکر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے انتخابات میں کامیابی حاصل کر لی ہے۔ 

ٹویٹر پر ، مسلم لیگ ن کی نائب صدر نے کہا کہ ان کی پارٹی نے سخت جدوجہد کی ہے لیکن دھوکہ دہی سے نمٹنا آسان نہیں ہے۔ میں نے نتائج کو قبول نہیں کیا اور کبھی  نہیں کروں گی۔ اس جعلی حکومت کے نتائج کو تسلیم نہیں کرتی ہوں۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ اس بے شرمی سے دھوکہ دہی پر پارٹی جلد فیصلہ کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں | میرا مقصد فوج کے خلاف بات کرنا نہیں تھا، حامد میر نے رجوع کر لیا

مریم نواز نے مزید کہا کہ میں مسلم لیگ (ن) کے تمام ووٹرز اور کارکنوں کی ہمت اور ان کی تعریف کرتی ہوں۔ 

 دوسری جانب ، پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پیر کو کہا ہے کہ ان کی پارٹی بے ضابطگیوں کے باوجود آزاد کشمیر میں سب سے بڑی اپوزیشن جماعت بن کر ابھری ہے۔

 بلاول بھٹو نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے انتخابات میں تشدد اور دھاندلی کا سہارا لیا اور انتخابی قواعد کی خلاف ورزی پر الیکشن کمیشن تحریک انصاف کے خلاف کارروائی کرنے میں ناکام رہا۔

 بلاول بھٹو نے پیپلز پارٹی آزادکشمیر ٹیم کی بھی تعریف کی اور کہا کہ مجھے ان پر فخر ہے۔ 

یاد رہے کہ تحریک انصاف آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی انتخابات میں 25 نشستیں جیت کر سب سے بڑی جماعت بن کر ابھری ہے۔ پیپلز پارٹی نے 11 اور پاکستان مسلم لیگ (ن) نے 6 نشستیں حاصل کی ہیں۔ مسلم کانفرنس (ایم سی) اور جموں کشمیر پیپلز پارٹی (جے پی پی) نے ایک ایک نشست حاصل کی۔ 

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔