مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

مجھے رزلٹ چاہیے؛ رمیز راجہ کی بابر اعظم سے ٹی 20 ورلڈ کپ کے حوالے سے ملاقات

پاکستان کے سابق کپتان رمیز راجہ ، جن کا پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے نئے چیئرمین بننے کا امکان ہے ، نے بدھ کو کپتان بابر اعظم سے ملاقات کی ہے جس میں آئی سی سی مینز ٹی 20 کرکٹ ورلڈ کپ سے قبل ٹیم کے انتخاب پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔ 

پی سی بی کے ذرائع نے نجی نیوز کو بتایا کہ سابق کرکٹر نے بابر اعظم کو میگا ایونٹ کے لیے اپنی ٹیم منتخب کرنے کی آزادی دی ہے۔ تاہم ، اس نے کپتان سے نتائج کا بھی مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ مجھے رزلٹ چاہیے۔ 

ایک ذرائع نے رمیز راجہ کے حوالے سے کہا کہ آپ [بابر اعظم] ورلڈ کپ کے لیے ٹیم منتخب کرنے کے لیے آزاد ہیں ، آپ جس کو چاہیں ، مجھے نتائج چاہیے۔ سلیکشن کے معاملے میں کوئی مداخلت نہیں کرے گا لیکن فٹنس پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں | وکٹم ، ٹک ٹکر ، ایف آئی آر میں غلط گھر کا ایڈریس لکھیں

 بابر  اعظم نے رمیز راجہ کا شکریہ ادا کیا اور وعدہ کیا کہ 17 اکتوبر کو شروع ہونے والے ٹورنامنٹ کے نتائج سامنے اچھے ہوں گے۔ 

رمیز راجہ نے بالترتیب پی سی بی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر وسیم خان اور ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس سینٹر ندیم خان سے نیوزی لینڈ سیریز کے لیے اسکواڈز اور ڈومیسٹک کرکٹ سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ 

رمیز راجہ کو وزیراعظم عمران خان نے پی سی بی کے سرپرست اعلیٰ نامزد کیا ہے۔ چیئرمین کے انتخاب کے لیے پی سی بی بورڈ آف گورنرز کا اجلاس 13 ستمبر کو ہوگا۔

 نجی نیوز نے پہلے خبر دی تھی کہ سابق کرکٹر اور سابق پاکستانی کپتان نے آنے والے دنوں میں پاکستان کرکٹ کے لیے اپنے روڈ میپ پر عمل درآمد کے لیے مشاورت شروع کر دی ہے۔ 

ذرائع نے ٹی وی چینل کو بتایا تھا کہ رمیز راجہ نے پی سی بی کے اعلیٰ عہدیداروں سے رابطہ کیا ہے اور اپنے مجوزہ روڈ میپ کے مطابق ان کو پاکستان کرکٹ کو بہتر بنانے کے اقدامات پر ان پٹ دینا شروع کر دیا ہے۔ 

پی سی بی کے ذرائع نے بتایا کہ آنے والے دنوں میں جو بھی فیصلے ہوں گے وہ رمیز راجہ کے روڈ میپ کے مطابق ہوں گے۔ اگر تقرر کیا گیا تو رمیز راجہ کو کئی چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ 

 پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے مالیاتی ماڈل پر عمل درآمد ، ٹائٹل اسپانسر شپ اور براڈ کاسٹرز کا معاہدہ اگلے تین سالوں کے لیے رمیز راجہ کی راہ میں کچھ اور رکاوٹیں ہوں گی۔ انہیں نیشنل ہائی پرفارمنس سنٹر ، ڈومیسٹک ، سکول اور کلب کرکٹ سے جڑے مسائل سے بھی نمٹنا پڑے گا۔ 

رمیز راجہ کو اپنی ٹیم سے پی سی بی کی اوپری منزل پر تبدیلیاں کرنی ہوں گی۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ پی سی بی کے سی ای او وسیم خان کے معاہدے کی تجدید یا توسیع نہیں کی جائے گی۔ 

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔