مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

ماڈل عظمی خان پر تشدد، ایف آئی آر درج

مئی 28 2020: (جنرل رپورٹر) ماڈل عظمی خان نے اپنے اوپر ہونے والے تشدد پر مقدمہ درج کروا لیا ہے- یہ مقدمہ ملک ریاض کی صاحبزادیوں اور اور 15 نامعلوم افراد کے خلاف درج کیا گیا ہے

تفصیلات کے مطابق یہ مقدمہ لاہور ڈیفینس میں درج کیا گیا ہے جبکہ ڈی آئی جی آپریشنز رائے بابر سعید کہتے ہیں کہ مقدمے کی تفتیش میرٹ پر ہو گی

درج کی گئی ایف آئی آر میں زبرستی گھر میں گھسنے, مارنے, دھمکیاں دینے اور توڑ پھوڑ سمیت دیگر دفعات شامل ہیں- عظمی خان کی رپورٹ کے مطابق ملزمان نے گھر میں توڑ ہھوڑ کی, ان کی بہن کو آتے ہی سر پر بوتل مار کر زخمی کیا نیز حملہ آور گھر کا دروازہ توڑ کر داخل ہوئے تھے جبکہ عظمی خان اور ان کی بہن دونوں اعتکاف میں تھیں

اس حوالے سے سوشل میڈیا پر ایک وڈیو بھی وائرل ہوئی ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ چند خواتین مسلح افراد کے ساتھ عظمی خان کے گھر میں داخل ہو کر توڑ پھوڑ کرتے ہیں اور جان سے مارنے سمیت دیگر دھمکیاں بھی دیتے ہیں- ایک حملہ آور خاتون اپنے سیکورٹی گارڈ سے عظمی خان کے ساتھ زیادتی کرنے کو بھی کہتی ہے

اس کے علاوہ کچھ اور وڈیوزبھی زیر گردش ہیں جن میں ایک میں نامعلوم خاتون عظمی خان کو آئی ایس آئی کے زریعے اٹھوانے کی بات کرتی ہے- ایک دوسری وڈیو میں خود نظر نا آنے والی خاتون اداکارہ عظمی خان سے کسی عثمان نامی شخص سے متعلق تعلقات رکھنے سے متعلق سوال کرتی ہے

اس واقعے کے بعد عظمی خان نے فیسبک اکاونٹ سے جاری کردہ اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اب میں جو کھو سکتی تھی وہ کھو دیا لہذا ملک کے طاقتور لوگوں کے خلاف خون کے آخری قطرے تک لڑوں گی- انہوں نے دعوی کیا کہ ملک ریاض کی بیٹیوں عنبر ملک اور پشمینہ ملک نے غنڈوں سمیت آدھی رات ان کے گھر میں داخل ہو کر تشدد کیا

عظمی خان نے مزید کہا کہ میرے والدین پہلے ہی اس دنیا میں نہیں لہذا آپ انہیں نہیں مار سکتے زیادہ سے زیادہ مجھے قتل کر سکتے ہیں مگر میں اب لڑوں گی

انہوں نے پنجاب پولیس سے ایف آئی آر درج کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ مجھے امید ہے میں بھی اتنی ہی پاکستانی ہوں جتنا کہ ملک ریاض ہے

یاد رہے کہ لاہور ڈیفینس کالونی میں عظمی خان کی مدعیت میں ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔