لاہور: سمنگ پول کا مالک دس سالہ لڑکی سے زیادتی اور قتل پر گرفتار

سوئمنگ پول کے مالک

 ‏ پنجاب پولیس نے منگل کو مقامی سوئمنگ پول کے مالک کو 10 سالہ بچی کے ساتھ زیادتی اور قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا اور پھر یہ کہ لڑکی پول میں ڈوب گئی۔

 کیپٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) لاہور غلام محمود ڈوگر نے بتایا کہ سوئمنگ پول کے مالک نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کیا اور پھر لاش پول میں پھینک دی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پول کے مالک نے دعویٰ کیا تھا کہ لڑکی تیراکی کے دوران پول میں ڈوب گئی۔ 

سی سی پی او نے مزید کہا کہ 10 سالہ بچی اپنے بھائی اور بہن کے ساتھ پول میں گئی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پول کا مالک علی رضا اسے بسکٹ کا لالچ دے کر لڑکی کو پول کے قریب واقع کینٹین کے عقب میں لے گیا جہاں اس نے زیادتی کر کے اسے قتل کر دیا۔ 

یہ بھی پڑھیں | سیلاب متاثرہ علاقوں میں روڈوں اور بجلی کی بحالی کا کام جاری

یہ بھی پڑھیں | کراچی میں ڈینگی وائرس سے ہسپتال بھر گئے

لاش کو سوئمنگ پول میں پھینک دیا

 انہوں نے مزید کہا کہ لڑکی کے بہن بھائیوں نے اپنی بہن کے بارے میں دریافت کیا جس پر مالک نے بتایا کہ وہ گھر چلی گئی ہے۔ بعد ازاں، اس نے لڑکی کی لاش کو سوئمنگ پول میں پھینک دیا اور اسٹیج کرنے کی کوشش کی کہ لڑکی حادثاتی طور پر پول میں ڈوب گئی۔ 

 سی سی پی او نے بتایا کہ پول کے مالک سمیت 11 افراد کے ڈی این اے اور پولی گراف ٹیسٹ کرائے گئے تاکہ یہ نتیجہ اخذ کیا جا سکے کہ پول کے مالک نے ہی لڑکی کے ساتھ زیادتی کی اور اسے قتل کیا۔ 

یاد رہے کہ لاہور کے تھانہ مناواں کی حدود شریف پورہ میں 10 سالہ بچی کو نجی سوئمنگ پول میں زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔