عثمان بزدار نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں درخواست ضمانت واپس لے لی

عثمان بزدار نے ضمانت کی درخواست واپس لے لی

سابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں آج منگل کو احتساب عدالت سے عبوری ضمانت کی درخواست واپس لے لی ہے۔

 عثمان بزدار اپنے کیس میں ضمانت کی مدت ختم ہونے کے بعد احتساب عدالت کے جج شیخ سجاد احمد کے سامنے پیش ہوئے۔

عثمان بزدار اب نیب کو مطلوب نہیں

 قومی احتساب عدالت (نیب) کے ایک تفتیش کار نے عدالت کو بتایا کہ سابق وزیر اعلیٰ عثمان بزدار اب نیب کو مطلوب نہیں ہیں اور ان کے خلاف کوئی وارنٹ گرفتاری جاری نہیں کیے گئے ہیں جس کے بعد عثمان بزدار نے درخواست واپس لے لی ہے۔

یہ بھی پڑھیں | عمران خان کا پارٹی رہنماؤں کو ’الیکشن موڈ‘ میں رہنے کا مشورہ

یہ بھی پڑھیں | جنرل باجوہ نے عثمان بزدار کو وزیراعلیٰ پنجاب کے عہدے سے ہٹانے کا کہا: عمران خان

 نیب عہدیدار نے مزید کہا کہ گرفتاری سے قبل سابق وزیراعلیٰ کو آگاہ کیا جائے گا۔ 

 گزشتہ نومبر میں احتساب عدالت نے سابق وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی آمدن سے زائد اثاثے رکھنے کے الزام میں نیب کی جانب سے شروع کیے گئے مقدمے میں عبوری ضمانت قبل از گرفتاری منظور کی تھی۔

وزیر اعلیٰ کے خلاف شراب کے لائسنس کیس

اینٹی گرافٹ واچ ڈاگ پہلے ہی سابق وزیر اعلیٰ کے خلاف شراب کے لائسنس کیس میں اختیارات کے ناجائز استعمال سے متعلق کیس کی تحقیقات کر رہا ہے۔ 

 انہیں محکمہ مواصلات میں غیر قانونی ترقیوں اور بطور وزیراعلیٰ پنجاب کے اہم ترقیاتی منصوبوں کے ٹھیکے دینے میں کرپشن کے الزامات کا بھی سامنا ہے۔

ثاقب شیخ

ثاقب شیخ فاؤنڈیشن فار ڈیفنس آف ڈیموکریسیز کے ایک ریسرچ فیلو ہیں، جو واشنگٹن میں قائم، قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی پر توجہ مرکوز کرنے والا غیر جانبدارانہ تحقیقی ادارہ ہے۔