عامر لیاقت حسین انتقال کر گئے

عامر لیاقت حسین اپنے گھر پر انتقال کر گئے

متعدد اطلاعات کے مطابق پاکستانی رکن پارلیمنٹ عامر لیاقت حسین اپنے گھر پر انتقال کر گئے ہیں۔ وہ 49 سال کے تھے۔ 

 وہ اپنے گھر میں بے ہوش ہو گئے اور اسے آغا خان یونیورسٹی ہسپتال لے جایا گیا، لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے۔ پی ٹی آئی رہنما جمال صدیقی نے ان کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ عامر لیاقت کے ایک ملازم نے ان کی موت کی اطلاع دی ہے۔

 اسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ عامر لیاقت کی موت کی وجہ پوسٹ مارٹم کے بعد ہی معلوم ہوسکے گی۔ 

جیسے ہی انتقال کی خبر پاکستان کی قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف تک پہنچی تو انہوں نے ایوان کی کارروائی جمعہ کی شام پانچ بجے تک ملتوی کر دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں | پنجاب پولیس نے ملتان میں کرکٹ سیریز کے لئے فول پروف سیکورٹی کی اجازت دے دی 

یہ بھی پڑھیں | دوسو افراد کا سرکاری حج، وزیر اعظم نے ایکشن لے لیا 

 انہوں نے کہا تھا کہ وہ جلد ملک چھوڑ دیں گے۔ اس کی تیسری بیوی نے اسے اپنی شادی کے ایک ماہ کے اندر چھوڑ دیا تھا اور ان پر منشیات کے عادی ہونے اور بیوی کو مارنے کا الزام لگایا تھا۔ 

 ایک پاکستانی میڈیا آؤٹ لیٹ کے ایڈیٹر حمزہ اظہر سلام نے بدھ کی شام ٹویٹ کیا تھا کہ ان کی عامر حسین سے بات ہوئی ہے، جنہوں نے صحافی کو بتایا تھا کہ وہ نامعلوم مقام پر جا رہے ہیں۔ 

عامر لیاقت حسین نے متحدہ قومی موومنٹ کے ساتھ سیاست میں قدم رکھا اور 2002 میں پہلی بار پاکستان کے رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے۔

 انہیں ستمبر 2004 میں سابق وزیر اعظم نے مذہبی امور اور زکوٰۃ و عشر ڈویژن کا وزیر مملکت مقرر کیا جبکہ 2018 میں وہ تحریک انصاف کی جانب سے رکن اسمبلی منتخب ہوئے۔ ان للہ و انا الیہ راجعون۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں