مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

تبصرے

    سٹیٹ بینک نے 25 ہزار تک ڈیجیٹل ٹرانسفرز “فری” کر دیں

    اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) نے بدھ کے روز بینکوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ انفرادی کسٹمرز کو ہر اکاؤنٹ  میں 25000 روپے تک ماہانہ مفت ڈیجیٹل فنڈ ٹرانسفر سروسز کی فراہمی یقینی بنائیں۔ تاہم ، بینک بھی اس مجموعی حد کو زیادہ مقدار میں مقرر کرنے کا انتخاب کرسکتے ہیں۔

     اسٹیٹ بینک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس سے انفرادی صارفین مفت فنڈ کی منتقلی کی اپنی ماہانہ حد میں رہتے ہوئے زیادہ سے زیادہ مفت فنڈ ٹرانسفر اور لین دین کرسکیں گے۔

     ایک ماہ میں ہر اکاؤنٹ میں 25،000 روہے کی مجموعی حد سے زیادہ کے لین دین کے لئے  بینک صارفین سے چارج کرسکتے ہیں۔ 

     بہر حال ، نئی ہدایات بینکوں کو اپنے صارفین کو ڈیجیٹل فنڈ کی منتقلی کی خدمات مفت فراہم کرنے کے لئے ملک میں ڈیجیٹل ادائیگیوں کو فروغ دینے کی ترغیب دیتی ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں | میڈیکل آکسیجن کی کمی کیوں ہو رہی ہے اور یہ کیسے بنتی ہے؟

     گذشتہ سال مارچ میں ، اسٹیٹ بینک نے بینکوں اور دیگر خدمت فراہم کنندگان کو مشورہ دیا تھا کہ کوویڈ 19 کے دوران لاک ڈاؤن کی غیرمعمولی صورتحال سے نمٹنے کے لئے سودے کی حد سے قطع نظر اپنے تمام صارفین کو بین البینک فنڈ ٹرانسفر  خدمات فرء پیش کریں۔ 

    اس کا مقصد یہ تھا کہ مشکل اوقات کے دوران بینک صارفین کو آن لائن خدمات کے ذریعے اپنی بینکاری خدمات کی ضروریات کو پورا کریں اور کوویڈ کے پھیلاؤ کو روکنے میں مدد ہو۔ 

    اس اقدام کے نتیجے میں گاہکوں کی طرف سے زبردست ردعمل سامنے آیا ، جس میں انٹرنیٹ اور موبائل بینکاری لین دین کا گذشتہ سال کے دوران لاک ڈاؤن میں دوگنا ہو گیا تھا۔

     ایس بی پی نے عوام کو ان کی آپریشنل لاگت کی وصولی کے بغیر اور بلا معاوضہ بین بینک فنڈ کی منتقلی کی خدمات کی اجازت دے کر اس اقدام کے لئے تمام سروس فراہم کرنے والوں کے تعاون کو سراہا۔

     اسٹیٹ بینک نے موجودہ آئی بی ایف ٹی قیمتوں کا تعین کرنے والے طریقہ کار کا جائزہ لیا اور اس میں کچھ تبدیلیاں کی ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ بینکوں اور دیگر مالیاتی اداروں کے ذریعے پائیدار بنیاد پر مفت آئی بی ایف ٹی خدمات فراہم کی جائیں گی۔ نئی ہدایات بینکوں اور دیگر خدمات فراہم کرنے والوں کو اعلی قیمت والے لین دین پر کم سے کم فیس وصول کرنے کی اجازت دیتی ہیں جبکہ آبادی کے کم آمدنی والے طبقات کی حفاظت اور حوصلہ افزائی کرتے ہیں کہ وہ مفت ڈیجیٹل لین دین کا استعمال جاری رکھیں۔ 

    اسٹیٹ بینک نے بینکوں کو یہ بھی مشورہ دیا ہے کہ ایک ہی بینک (انٹربینک فنڈ ٹرانسفر) کے اندر مختلف کھاتوں کے مابین تمام ڈیجیٹل فنڈ ٹرانسفر لین دین مفت رہے گا۔ مزید یہ کہ آنے والی انٹربینک فنڈ ٹرانسفر لین دین بھی فیس سے آزاد رہے گا۔

    جاویریہ حارث

    جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

    سبسکرائب
    کو مطلع کریں
    guest
    0 Comments
    Inline Feedbacks
    View all comments
    0
    آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
    ()
    x