سانحہ سیالکوٹ: مقتول پریانتھا کمارا کا جسم خاکی سری لنکا بھیجنے کی تیاریاں مکمل

 سیالکوٹ  سیالکوٹ

پنجاب حکومت

کے ترجمان حسن خاور نے پیر کو بتایا کہ سیالکوٹ کے غیر ملکی فیکٹری مینیجر پریانتھا کمارا کی میت جلد سری لنکا روانہ کی جائے گی۔ 

تفصیلات کے مطابق سانحہ سیالکوٹ کے مقتول فیکٹری منیجر پریانتھا کمارا کی میت پورے اعزاز و احترام کے ساتھ سری لنکا روانہ کی جائے گی۔ 

سری لنکن شہری کی میت لاہور ایئرپورٹ لے جائی گئی۔ وزارت داخلہ، سری لنکا ہائی کمیشن کے نمائندے طاہر اشرفی، اعجاز عالم اور دیگر حکام بھی ایئرپورٹ پر موجود تھے۔ 

 سری لنکن شہری پریانتھا کمارا کی میت کی امیگریشن مکمل کر لی گئی جس کے بعد لاش کو طیارے میں منتقل کر دیا گیا۔ پریانتھا کمارا کی میت کو 12:30 بجے خاکی سری لنکن ایئر لائنز کی پرواز سے کولمبو پہنچایا جائے گا۔ 

یہ بھی پڑھیں | مریم نواز کے وزیر اعظم کے لئے نامناسب الفاظ کے بعد سوشل میڈیا صارفین برہم   

پنجاب حکومت کے ترجمان حسن خاور کا کہنا ہے کہ سیالکوٹ واقعے کی تحقیقات جاری ہیں اور جیسے ہی چیزیں سامنے آئیں گی سامنے لائیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ تحقیقات سائنسی بنیادوں پر کی جائیں گی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور آئی جی پنجاب ذاتی طور پر تفتیش کے پورے عمل کی نگرانی کر رہے ہیں۔ 

خیال رہے کہ گزشتہ روز سری لنکن منیجر کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آئی تھی۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق پریانتھا کی موت کھوپڑی اور جبڑا ٹوٹنے کی وجہ سے ہوئی۔ 

 رپورٹ میں کہا گیا کہ پریانتھا کے جسم کے تمام حصوں پر تشدد کے نشانات تھے۔ تشدد سے ان کے جسم کی ایک ٹانگ کے علاوہ تمام ہڈیاں ٹوٹ گئیں۔ ننانوے فیصد جسم مکمل طور پر جھلس گیا تھا جب کہ پریانتھا کا دل اور پھیپھڑے بھی تشدد سے متاثر ہوئے تھے۔ 

 واضح رہے کہ سیالکوٹ کے وزیرآباد روڈ پر چمڑے کی فیکٹری میں گزشتہ 9 سال سے منیجر کے طور پر کام کرنے والے سری لنکن شہری کو مشتعل ملازمین کے ہجوم نے بے دردی سے قتل کردیا تھا اور پھر اس کی لاش کو آگ لگا دی تھی۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔