دعا زہرہ کے والد نے اپنی بیٹی کے لئے جذباتی بیان جاری کر دیا

دعا زہرہ کے والد سید مہدی کاظمی نے پیر کو اپنی بیٹی کو ایک جذباتی پیغام دیتے ہوئے یقین دلایا کہ ان کا خاندان اب بھی ان سے پیار کرتا ہے اور وہ ان کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔ 

وہ میڈیا سے بات کر رہے تھے جب میڈیکل بورڈ کی رپورٹ میں یہ نتیجہ اخذ کیا گیا کہ دعا زہرا کی عمر 15 سے 16 سال کے درمیان ہے۔ 

مہدی کاظمی نے سپریم کورٹ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اگر پولیس شفاف تحقیقات کرے تو تمام ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔ 

دعا زہرہ کے والد، جو پچھلے دو مہینوں میں انصاف کے حصول کے لیے پوسٹ کرنے جا رہے ہیں، نے اسے بتایا کہ یہ ان کے لیے ان کی محبت کا چھوٹا ثبوت ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر میری بیٹی ابھی مجھے دیکھ رہی ہے، تو میں اسے بتانا چاہتا ہوں کہ وہ جلد ہی میرے ساتھ ہو گی، اور اسے وہی پیار ملے گا جو اسے پہلے ملا تھا۔ میں آپ کے ساتھ کھڑا ہوں اور پورا خاندان مستقبل میں بھی آپ کی حمایت جاری رکھے گا۔

 والد مہدی کاظمی نے کہا کہ وہ رپورٹ سے مطمئن ہیں اور مطالبہ کیا کہ مجرموں کو اب انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔

یہ بھی پڑھیں | شاہین شاہ آفریدی نے خیبر پختونخواہ کی پولیس جوائن کر لی  

یہ بھی پڑھیں | میڈیکل بورڈ نے دعا زہرا کی عمر کا تعین کر لیا  

 اس موقع پر مہدی کاظمی کے وکیل جبران ناصر نے کہا کہ تمام شواہد لڑکی کی عمر 16 سال سے کم ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔ 

 انہوں نے کہا کہ عدالت میں جمع کرائی گئی رپورٹ نے ان کی عمر کے حوالے سے والدین کے دعوے کو درست قرار دیا ہے۔ 

 کیس کے تفتیشی افسر ڈی ایس پی شوکت شاہانی پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے دعویٰ کیا کہ آئی او نے کیس کی منصفانہ تحقیقات نہیں کی اور وہ پہلے دن سے اپنے اعلیٰ افسران کو گمراہ کر رہے تھے جس کے نتیجے میں سندھ پولیس کے قائم مقام سربراہ کامران کو عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ 

 ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آئی او رپورٹ کی روشنی میں ضمنی چالان پیش کرے گی جس کے بعد عدالت فیصلہ کرے گی کہ وہ اس معاملے کا نوٹس لیتی ہے یا نہیں۔ 

میڈیکل بورڈ کا نتیجہ 

دعا زہرہ کے والدین نے اپنے موقف کی توثیق کے لیے جو بل پیش کیا ہے، اس میں نوعمر لڑکی کی عمر کا تعین کرنے کے لیے بنائے گئے 10 رکنی میڈیکل بورڈ نے کہا ہے کہ اس کی عمر 15 سے 16 سال کے درمیان ہے۔ رپورٹ پیر کو جوڈیشل مجسٹریٹ (ایسٹ) آفتاب احمد بگھیو کو پیش کی گئی۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں