خیبرپختونخواہ: سیلاب کی وجہ سے 6 لاکھ افراد بےگھر

کے پی صوبے میں تباہ کن سیلاب

خیبر پختونخواہ (کے پی) صوبے میں تباہ کن سیلاب سے کم از کم 264 افراد ہلاک، 327 زخمی اور 6 لاکھ سے زائد افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔ 

 خیبر پختونخواہ کے وزیر اعلیٰ محمود خان کو کے پی کے سیلاب میں ہونے والے نقصانات کے ابتدائی تخمینے پر بریفنگ دی گئی جس میں 264 افراد ہلاک، 327 زخمی، 6 لاکھ بے گھر اور 30,233 مکانات مکمل طور پر تباہ ہوئے۔ 

ڈیرہ اسماعیل خان میں 29 افراد جاں بحق، 74 زخمی اور 62 ہزار 511 مکانات تباہ جبکہ سوات میں 26 شہری جاں بحق، 28 زخمی اور 233 مکانات منہدم ہوئے۔ 

لوئر دیر میں سیلاب

 لوئر دیر میں سیلاب سے 15 افراد جاں بحق، 10 زخمی، 222 مکانات تباہ، مانسہرہ میں 22 افراد جاں بحق، ایک زخمی اور 23 مکانات منہدم ہوگئے۔ 

صوبائی اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ مجموعی طور پر 42,965 مکانات کو جزوی نقصان پہنچا اور 9,411 مویشی ہلاک ہوئے۔

 اس سے قبل موسمیاتی تبدیلی کی وزارت نے کہا تھا کہ ملک میں سیلاب کے باعث ہلاکتوں کی تعداد 1200 سے تجاوز کر گئی ہے، جب کہ 3000 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں | وہاب علی بگتی کو پاک فوچ نے ریسکیو کر لیا 

یہ بھی پڑھیں | کراچی میں دوبارہ کب بارش ہو گی؟ 

ملک کے جنوبی حصے اس وقت زیر آب

 وزارت موسمیاتی تبدیلی کے جاری کردہ بیان کے مطابق گزشتہ 2 ماہ میں ملک کا 70 فیصد حصہ سیلاب کا شکار ہوا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے جنوبی حصے اس وقت زیر آب ہیں۔ 

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ کاؤنٹی میں تباہ کن سیلاب کے درمیان صحت کے خدشات بڑھ رہے ہیں اور اس وقت دریائے سندھ کو شدید سیلاب کا سامنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں سیلاب سے 1200 سے زائد افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ہے، جب کہ شہر میں 3000 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔ 

ملک میں 33 ملین سے زائد افراد کو نقصان پہنچا

 وزارت نے بتایا کہ سیلاب کے دوران ملک میں 5000 کلومیٹر سے زیادہ سڑکیں اور 243 پلوں کو نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں 33 ملین سے زائد افراد اور 10 لاکھ مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

 بیان میں مزید کہا گیا کہ سندھ میں 90 فیصد اور ملک کے 45 فیصد فصلوں کو سیلاب سے نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ابتدائی اندازوں کے مطابق سیلاب سے تقریباً 10 بلین ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔ 

 انہوں نے مزید کہا کہ تمام پڑوسی اور دوست ممالک ضرورت کی اس گھڑی میں حکومت کے ساتھ عطیات اور تعاون کر رہے ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔