حکومتی ارکان کے مسجد نبوی پہنچنے پر ہجوم کے مخالف نعرے

وزیراعظم شہباز شریف اور ان کے وزراء جمعہ کے روز جب مسجد نبوی پہنچے تو مخالفین کی جانب سے نعرے بازی کی گئی۔

 تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی کے حامی کارکنان ان کے گرد جمع ہو گئے اور “چور چور” کے نعرے لگانا شروع کر دئیے۔

 سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیوز کی ایک سیریز میں شرپسندوں کو خاص طور پر نواب شاہ زین بگٹی کو نشانہ بناتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جس میں انہیں “بے شرم” اور “لوٹا” کہا جا رہا ہے۔ 

 وزیراعظم اپنی کابینہ کے ارکان اور ارکان پارلیمنٹ کے ساتھ تین روزہ سرکاری دورے پر مقدس شہر مدینہ شریف پہنچے ہیں۔

لیہ بھی پڑھیں | لوگوں سے مانگنا ذلت اور اللہ سے مانگنا عزت ہے، مولانا طارق جمیل  

واقعے کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے وزیر اطلاعات نے کہا کہ یہ معاشرے کی تباہی کی عکاسی کرتا ہے۔

میں اس مقدس مقام پر اس شخص سابق وزیراعظم عمران خان کا نام نہیں لینا چاہتی۔ درحقیقت، یہاں کوئی سیاسی بات نہیں ہونی چاہیے۔

 مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ معاشرے کا ایک بڑا طبقہ اس قسم کے رویے کا شکار ہوا ہے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ حالات میں بہتری آئے گی۔  ہمارے کارکن بھی یہاں ہیں۔ لیکن ہم نے انہیں سختی سے کہا ہے کہ وہ غنڈہ گردی کا سہارا نہ لیں۔ 

 وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ عمران نیازی کی طرف سے پھیلائی گئی برائی نے روضہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم کو بھی نہیں بخشا۔ 

 انہوں نے مزید کہا کہ ’امن، محبت اور تحفظ کی جگہ کو سیاست کے لیے استعمال کیا گیا ہے۔

سوشل میڈیا پر لوگوں کی بڑی تعداد اس واقعے کی مذمت کرتی نظر آ رہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مقدس روضہ پر تو آواز اونچی کرنا بھی بےادبی ہے تو چہ جائیکے اس مقدس مقام کو سیاست اور شور کے لئے استعمال کیا جائے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں