بھارتی ملٹری ہیلی کاپٹر تباہ، چیف آف ڈیفینس سٹاف بھی سواروں میں شامل

 بھارت  بھارت

ہندوستانی فضائیہ

نے بتایا کہ ہندوستان کے دفاعی سربراہ جنرل بپن راوت کو لے جانے والا ایک ہیلی کاپٹر بدھ کو جنوبی ریاست تامل ناڈو میں گر کر تباہ ہو گیا ہے۔ 

ہندوستانی فضائیہ نے ٹویٹر پر کہا کہ 63 سالہ چیف آف ڈیفنس اسٹاف روسی ساختہ ہیلی کاپٹر میں سفر کر رہے تھے کہ آج کونور، تمل ناڈو کے قریب حادثہ پیش آیا۔

 بپن راوت ہندوستان کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف ہیں۔ یہ ایک ایسا عہدہ جسے ہندوستانی حکومت نے 2019 میں قائم کیا تھا اور انہیں وزیر اعظم نریندر مودی کے قریب دیکھا جاتا ہے۔

 ایک سینئر فوجی افسر نے بتایا کہ وہ اور ان کی اہلیہ دیگر افسران کے ساتھ جہاز میں سوار تھے اور ڈیفنس سروسز سٹاف کالج کی طرف جارہے تھے۔ 

یہ بھی پڑھیں | مریم نواز کے وزیر اعظم کے لئے نامناسب الفاظ کے بعد سوشل میڈیا صارفین برہم   

ہندوستانی نیوز چینلز پر نشر ہونے والی ویڈیوز میں نیلگیرس ضلع میں کالج کے قریب گھنے جنگلات والے علاقے میں حادثے کی جگہ پر ایک آگ کا ملبہ دکھایا گیا ہے۔ 

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر نے بدھ کی سہ پہر سلور ایئر فورس اسٹیشن سے اڑان بھری اور کچھ مسافروں کو علاج کے لیے اسپتال لے جایا گیا۔ 

 بپن راوت کا تعلق ایک فوجی خاندان سے ہے جس کی کئی نسلیں ہندوستانی مسلح افواج میں خدمات انجام دے چکی ہیں۔ 

اپنے پیچھے چار دہائیوں تک خدمات انجام دینے والے جنرل نے مقبوضہ کشمیر اور چین کی سرحد سے متصل لائن آف ایکچوئل کنٹرول کے ساتھ ساتھ افواج کی کمانڈ کی ہے۔ 

 انہیں ہندوستان کی شمال مشرقی سرحد پر شورش کو کم کرنے اور ہمسایہ ملک میانمار میں سرحد پار سے انسداد بغاوت آپریشن کی نگرانی کرنے کا سہرا دیا جاتا ہے۔

 فضائیہ نے کہا ہے کہ حادثے کی تحقیقات جاری ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں