برٹش پارلیمنٹ کا پاکستان کے 10 بلین درخت لگانے کے پراجیکٹ کی تعریف

برطانوی حکومت نے پاکستان میں 10 بلین درخت سونامی پروجیکٹ کو شروع کرنے اور اس پر عمل درآمد کرنے کی کوششوں کو سراہا ہے جس کا مقصد ملک میں آب و ہوا کی تبدیلی اور سبز نمو سے نمٹناہے۔ 

تفصیلات کے مطابق ، دوسرے دن برطانیہ کے ہاؤس آف لارڈز اجلاس کے دوران پاکستان کے اس اقدام کی تعریف کی گئی۔ برطانیہ کے وزیر برائے ماحولیات لارڈ گولڈسمتھ نے اس اقدام کو ایک بڑی کامیابی قرار دیا کہ جس سے دنیا سیکھ سکتی ہے اور اس کی تقلید کر سکتی ہے۔ 

‎انہوں نے کہا کہ پاکستان کا 10 بلین درخت سونامی منصوبہ دنیا میں درخت لگانے کا ایک سب سے زیادہ پرجوش اقدام ہے اور دوسروں کے لئے اس کی پیروی کرنا ایک کامیاب نظیر ہے۔

‎انہوں نے مزید کہا کہ میں پوری طرح سے ، جوش و خروش سے ، پاکستان کے 10 بلین ٹری سونامی اقدام اور اس منصوبے کی وجہ سے دسیوں ہزار ملازمتوں کو سراہتا ہوں۔ 

یہ بھی پڑھیں | دیہاتی ملیر ایکسپریس کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے

‎اس سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ کیا ممکن ہے اور کیا حاصل کیا جاسکتا ہے۔ 

‎برطانیہ میں ہاؤس آف لارڈز کے ممبر لارڈ عامر سرفراز اور قدرت کے پاکستان (ڈبلیو ڈبلیو ایف-پی) کے ورلڈ وائڈ فنڈ کے بورڈ ممبر  نے بھی اس منصوبے کے کامیاب نفاذ کا اعتراف کیا۔ 

‎انہوں نے کہا کہ پاکستان موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لئے عالمی قیادت کا مظاہرہ کررہا ہے۔ یہ پروجیکٹ ایک ایسی کوشش ہے جس پر تمام پاکستانی فخر کرسکتے ہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ 2021 سیارہ زمین کا سال ہے اور رواں سال کے آخر میں ہونے والی اقوام متحدہ کے موسمیاتی تبدیلی کانفرنس (سی او پی 26) کے 26 ویں اجلاس کے ذریعے ، ہم پاکستان سے مزید کامیابیاں منانے کی امید کرتے ہیں۔ پاکستان حکومت کے 10 بلین درخت سونامی منصوبے میں نہ صرف درختوں کی کاشت اور دوبارہ تخلیق شامل ہیں بلکہ اس میں جنگلات کی اراضی کو خراب کرنے سے بچانے کے لئے اقوام متحدہ کے پائیدار ترقیاتی مقصد (ایس ڈی جی) پر عمل درآمد کی حمایت پر بھی توجہ دی گئی ہے۔ 

‎بلین ٹری سونامی کا منصوبہ 2014 میں خیبر پختونخوا میں شروع کیا گیا تھا جس کی نگرانی ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان نے کی تھی۔ اس منصوبے کے تحت ، ڈبلیو ڈبلیو ایف کے ذریعہ پاکستان کے مختلف شہروں میں لگ بھگ 1.6 ملین دیسی درختوں کی پرجاتیوں کو لگایا گیا تھا جبکہ 2020 میں صوبائی محکمہ جنگلات ، تعلیمی اداروں اور سول سوسائٹی کی شراکت میں 1.002 ملین دیسی پودے لگائے گئے تھے۔

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔