ایل او سی: بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ سےایک جوان سمیت پانچ شہید

بھارت کی جانب سے ایل او سی کی خلاف ورزی اور بلا اشتعال فائرنگ پر چار شہری اور پاک فوج کا ایک فوجی شہید ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق  آئی ایس پی آر نے بتایا کہ بھارتی فوجیوں نے کشمیری آزادی پسندوں کے ہاتھوں ذلت کو روکنے کی کوشش میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے پار بلا اشتعال فائرنگ کا سہارا لیا۔

 کنٹرول لائن پر مختلف جگہوں پر سیز فائر کی خلاف ورزیوں (سی وی ایف) کے دوران خواتین سمیت 12 عام شہری زخمی ہوئے۔ شہید ہونے والے ایک فوجی کے علاوہ ، پاک فوج کے پانچ جوان زخمی ہوگئے جب کہ بھارتی فوجیوں کی گولہ باری کا موثر جواب دیا گیا۔ 

 پاک فوج کے موثر جواب سے ہندوستان کو جانی و مالی نقصانات کا سامنا کرنا پڑا۔

یہ بھی پڑھیں | وزیر اعظم آج تربت کے لئے تاریخی ترقیاتی پیکج کا اعلان کریں گے

 آئی ایس پی آر نے 7 اور 8 نومبر کی درمیانی شب کو بتایا کہ مبینہ طور پر ہندوستانی فوج نے ضلع کپواڑہ میں وادی نیلم کے سامنے مقبوضہ جموں وکشمیر (آئی او جے اور کے) علاقے میں کچھ آزادی پسند جنگجوؤں کے ساتھ انکاؤنٹر کیا جس میں اس میں چار افراد سمیت کچھ ہلاکتوں کا سامنا کرنا پڑا۔ 

 آزاد جموں و کشمیر کے مختلف شعبوں میں کنٹرول لائن کے ساتھ ھدف بنائے گئے علاقوں میں وادی نیلم (نیکرون ، کیل ، شارڈا ، دودھنیال ، شاہکوٹ ، جورا ، نوسری سیکٹر) ، وادی لیپا (ڈننا ، منڈل اور کیانی سیکٹر) ، وادی جہلم (چھم اور پانڈو سیکٹر) ، اور وادی باغ (پیرکانٹی ، سانک) شامل ہیں۔  اس جان بوجھ کر کی جانے والی خلاف ورزیوں میں ہندوستانی فوج نے اپنے آپ کو صرف فوجی چوکیوں تک ہی محدود نہیں رکھا  بلکہ تمام بین الاقوامی ذمہ داریوں اور انسانی حقوق کی سراسر نظرانداز کرتے ہوئے ، شہری آبادی کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں معصوم شہریوں کو شدید نقصان پہنچا  جس میں چار شہید اور 12 زخمی شامل ہیں۔ 

 اس اشتعال انگیز کارروائی کے جواب میں پاک فوج نے بھارتی فوج کو زبردست جواب دیا اور ان بھارتی پوسٹوں کو موثر انداز میں نشانہ بنایا جن میں بے گناہ شہریوں کو ملوث کیا گیا تھا۔ اس کے نتیجے میں ، مردوں اورخواتین کو مالی و جانی لحاظ سے کافی نقصان اٹھانا پڑا جسے بھارتی میڈیا نے بھی قبول کرلیا ہے۔

 ہندوستان کی فائرنگ سے ایک فوجی جوان شہید جبکہ پانچ دیگر افراد زخمی ہوگئے۔ آئی ایس پی آر نے کہا کہ بے گناہ شہریوں کو نشانہ بنانے کی اس طرح کی بزدلانہ کارروائیوں سے اخلاقیات کی سراسر کمی ، غیر پیشہ ورانہ مہارت اور بھارتی فوج کی طرف سے انسانی حقوق کی مکمل طور پر نظرانداز کی عکاسی ہوتی ہے اور 2003 کی جنگ بندی سمجھنے کی بھی واضح خلاف ورزی ہے۔

 آئی ایس پی آر کے بیان میں ایک بار پھر اس بات کا اعادہ کیا گیا ہے کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے اور پاک فوج انہی امنگوں پر عمل پیرا ہے۔ 

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

سبسکرائب
کو مطلع کریں
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
()
x