ایشیاء کپ 2020: فائنل ہارنے کے بعد پاکستانی کوچ ثقلین مشتاق کا رد عمل سامنے آ گیا

ایشیا کپ کے فائنل میں شکست

پاکستان کے کوچ ثقلین مشتاق نے اتوار کے ایشیا کپ کے فائنل میں شکست کے بعد اپنی ٹیم کے ٹی20 کھیلنے کے انداز کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ وہ اگلے ماہ ہونے والے ٹی20 ورلڈ کپ کے لیے صحیح راستے پر ہیں۔ فائنل ہارنا صرف بدقسمتی تھی۔

چھ اننگز میں ٹورنامنٹ کے سب سے زیادہ سکورر

 بابر اعظم کی ٹیم سری لنکا کو شکست دینے کے لیے 171 رنز کا تعاقب کرنے میں ناکام رہی، ان کی 23 رنز کی شکست نے دبئی میں دوسرے نمبر پر بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیموں کی جیت کے رجحان کو متاثر کیا۔ پاکستان کی جانب سے محمد رضوان نے 49 گیندوں میں 55 رنز بنائے اور چھ اننگز میں 281 رنز بنا کر ٹورنامنٹ کے سب سے زیادہ سکورر رہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | پاک افغان میچ میں بدنظمی پر متحدہ عرب امارات کے بھاری جرمانے 

یہ بھی پڑھیں | منیب بٹ نے پاکستان کی افغانستان سے جیت پر جشن منایا

 لیکن ثقلین کو ہائی آکٹین ​​فارمیٹ میں رضوان کے 117.57 رنز فی سو گیندوں کے سست اسٹرائیک ریٹ کی فکر نہیں ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔