امریکہ کا پاکستانی طالبات کے لئے ایک اور ایکسچینج پروگرام کا اعلان

  پاکستان  پاکستان

درمیانی آمدنی سے لے کر کم آمدنی والے گھرانوں کی خواتین پاکستانی طالبات اب امریکہ کی ممتاز یونیورسٹیوں میں تعلیم حاصل کرنے کے لیے “سسٹر ٹو سسٹر ایکسچینج پروگرام” کے لیے درخواست دے سکتی ہیں۔

اس پروگرام کو امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے مالی اعانت فراہم کی جاتی ہے اور اس کا انتظام شراکت داروں کے ایک کنسورشیم کے ذریعے کیا جاتا ہے جس میں امریکن یونیورسٹی، انٹرنیشنل ایجوکیشن اینڈ ریسورس نیٹ ورک شامل ہے۔

 ایک اہلکار نے بتایا کہ روانی کے ساتھ انگریزی لکھنے اور بولنے والے امیدواروں کو ویب سائٹ پر دیے گئے لنک پر درخواست کے ساتھ تعلیمی ٹرانسکرپٹس، کامیابی کے سرٹیفکیٹ، اور حوالہ خط جمع کرنے کی ترغیب دی جاتی ہے۔ 

 طلباء کو امریکہ کی اعلیٰ یونیورسٹیوں میں سٹریم (سائنس، ٹیکنالوجی، انجینئرنگ، آرٹس اور ریاضی) کے مضامین کے ساتھ طب، بین الاقوامی امور، صنفی مطالعہ، اور فارمیسی کے مضامین پڑھنے کا موقع ملے گا۔

 اہلیت کا معیار 

یہ بھی پڑھیں | بابر اعظم نے شادی اور سیلری سمیت دیگر اہم سوالات کے جوابات دے دئیے   

 تمام خواتین، جن کی عمریں 18 سے 24 سال ہیں، جنہوں نے 12 سال کی تعلیم مکمل کی ہے اور فی الحال کسی بھی کالج، یونیورسٹی، یا انسٹی ٹیوٹ میں زیر تعلیم ہیں وہ اس موقع سے فائدہ اٹھا سکتی ہیں۔ 

پچھلے تین تعلیمی سالوں میں کم از کم 70 فیصد نمبر رکھنے والے امیدوار درخواست دینے کے اہل ہوں گے۔ 

اس پروگرام کے لیے درخواست دینے کے اہل نہ ہونے والوں میں دوہری امریکی، پاکستانی شہری یا امریکی مستقل رہائشی، وہ امیدوار ہیں جنہوں نے پچھلے دو سالوں میں پہلے ہی امریکہ میں کسی بھی ایکسچینج پروگرام کا فائدہ اٹھایا ہے۔ 

 ایک اہلکار نے کو بتایا کہ یہ اقدام سوسائٹی فار انٹرنیشنل ایجوکیشن کی سرگرمیوں کا حصہ ہے جس کا کام پاکستان کی خواتین کے لیے مستقبل میں کیریئر کے مواقع پیدا کرنا ہے۔ 

یہ پروگرام مینٹرشپ پروگرام تیار کرنے اور نوجوان پاکستانی خواتین کو ان کی تعلیمی اور کیریئر کی ترقی کے لیے تعلیمی اور پیشہ ورانہ نیٹ ورکس سے جوڑنے کے لیے کام کرے گا۔

 اس میں مکمل ٹیوشن فیس، دو طرفہ سفر کے اخراجات، ہیلتھ انشورنس، رہائش، ویزا فیس، اور کھانے کی مفت سہولیات شامل ہوں گی جس سے ہائی اسکول کے طلباء کو یونیورسٹیوں میں جانے کے قابل بنایا جائے گا۔ 

 اس پیکج کے زریعے نوجوان خواتین کو تعلیمی اور پیشہ ورانہ مہارتوں، اعتماد اور نمائش سے آراستہ کیا جائے گا تاکہ وہ سماجی و ثقافتی رکاوٹوں پر قابو پا سکیں اور پاکستان کی معیشت میں اپنا حصہ ڈال سکیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں