امریکہ میں تیس سالہ مہنگائی کا ریکارڈ ٹوٹ گیا

 امریکہ امریکہ

امریکہ میں مہنگائی اکتوبر میں تیس سالوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے جس نے مسلسل سپلائی کی قلت اور صارفین کی مانگ کی وجہ سے گروسری سے لے کر کاروں تک ہر چیز کی گھریلو قیمتوں میں بڑے پیمانے پر پر اضافہ کیا ہے۔

لیبر ڈیپارٹمنٹ نے بتایا ہے کہ کنزیومر پرائس انڈیکس ( جو اس بات کی پیمائش کرتا ہے کہ صارفین اشیا اور خدمات کے لیے کیا ادائیگی کرتے ہیں ) کے مطابق اکتوبر میں مہنگائی میں ایک سال پہلے کی نسبت 6.2 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

 یہ 1990 کے بعد سے 12 ماہ کے دوران مہنگائی کی تیز ترین رفتار ہے۔

 بنیادی قیمتوں میں اکتوبر میں ایک سال پہلے کے مقابلے میں 4.6 فیصد اضافہ ہوا ہے جو ستمبر کے 4 فیصد اضافے سے زیادہ ہے اور 1991 کے بعد سب سے بڑا اضافہ ہے۔ 

  لیبر ڈیپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ قیمتوں میں اضافہ وسیع البنیاد تھا، نئے اور استعمال شدہ آٹوز، پٹرول اور دیگر توانائی کے اخراجات، فرنیچر، کرایہ اور طبی نگہداشت میں قیمتیں زیادہ متاثر ہوئی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں | مینار پاکستان واقعہ: کیا واقعی عائشہ اکرم اور ریمبو بھاری رقم بٹور چکے ہیں؟   

 اشیائے خوردونوش اور کھانے پینے کی اشیاء دونوں کی قیمتوں میں دہائیوں میں سب سے زیادہ اضافہ ہوا ہے۔ ایئر لائن کے کرایوں اور شراب کی قیمتیں کم ہوئی ہیِ۔

 امریکی اسٹاک گر گیا اور بانڈ کی پیداوار میں اضافہ ہوا ہت کیونکہ سرمایہ کاروں نے عالمی معیشت پر قیمت کے دباؤ کے اثرات کو جانچ لیا ہے۔

  مہنگائی میں یہ اضافہ فیڈرل ریزرو کی آسان رقم کی پالیسیوں کو ختم کرنے کی حکمت عملی کو پیچیدہ بنا رہا ہے جو مرکزی بینک نے کوویڈ19 کے اوائل میں نافذ کی تھیں۔ یہ بائیڈن انتظامیہ کے معاشی ایجنڈے کو متاثر کرنے والے ایک سیاسی عنصر کے طور پر بھی ابھرا ہے۔ 

مہنگائی پڑھنے سے ڈیموکریٹس کے تقریبا2 ٹریلین ڈالر کے سماجی اخراجات بڑھنے کا امکان ہے۔ اس منصوبے میں بچوں کی نگہداشت کی توسیع، مفت پری کنڈرگارٹن، ایک بہتر چائلڈ ٹیکس کریڈٹ اور دیگر اشیاء کے ساتھ ساتھ نسخے کی دوائیوں کی قیمتوں کو کم کرنے کے انتظامات شامل ہیں۔ 

 دیگر وجوہات کے ساتھ ساتھ اس کی ایک وجہ کوویڈ19 اور اثرات بھی بتائی گئی ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

cropped-urdu_khabar_logo.png

ہمارے نیوز لیٹر میں شامل ہوں۔

تازہ ترین مضامین، نوکریاں، مفت، تفریحی خبریں براہ راست اپنے ان باکس میں حاصل کریں۔

170000 سبسکرائبرز یہاں ہیں۔