مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

تبصرے

    ارشاد بھٹی کے جیو نیوز شو کے خلاف احتجاج، جیو نیوز آفس میں توڑ پھوڑ

    مظاہرین کی جانب سے چندرگر روڈ پر واقع جنگ جیو میڈیا گروپ کے ہیڈ آفس میں توڑ پھوڑ کی گئی ہے۔ 

    تفصیلات کے مطابق ارشاد بھٹی کے مزاحیہ ٹیلیویژن پروگرام “خبرناک” میں سندھ اور سندھی زبان سے متعلق دیئے گئے ریمارکس پر مشتعل مظاہرین کے ایک گروپ نے اتوار کے روز جیو نیوز اور جنگ گروپ کے ہیڈ دفاتر میں نا صرف توڑ پھوڑ کی بلکہ مبینہ طور پر وہاں موجود عملے کو یرغمال بھی کیا۔

     اس واقعے پر میڈیا تنظیموں کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار کیا جس میں حکام کو نوٹس لینے پر مجبور کیا گیا۔ 

    یہ بھی پڑھیں | پی ٹی آئی کے ممبران کی وفاداری کو ‘خریدنے‘ کی کوشش کی گئی ہے، عمران خان

    کراچی پولیس چیف کے ایڈیشنل آئی جی غلام نبی میمن نے بتایا کہ یہ ایک افسوس ناک واقعہ ہے۔ ہم ایف آئی آر درج کریں گے اور اس حملے کے ذمہ دار ملزم کو گرفتار کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم ان پولیس افسران کے خلاف انکوائری کر کے کارروائی کریں گے جو واقعے کو روکنے میں ناکام رہے ہیں۔ 

    ایک اور پولیس افسر نے بتایا کہ جنگ اور جیو نیوز کے دفاتر کے آس پاس تین یا چار ریلیاں نکالی گئیں۔ افسر نے بتایا کہ ایک “قوم پرست جماعت” نے بے روزگاری کے خلاف دھرنا دینے کا مطالبہ کیا تھا جب کہ ایک اور پارٹی کراچی پریس کلب میں لاپتہ افراد پر احتجاج کررہی تھی۔ 

    اسی دوران مبینہ طور پر ایک صحافی کے ساتھ کارکن کارکن مشتاق سرکی کی سربراہی میں متعدد افراد کلب روڈ سے شاہین کمپلیکس پہنچے اور وہاں موجود ایک بڑے گروپ کے ساتھ مل کر احتجاج کیا۔ پولیس افسر نے بتایا کہ مظاہرین نے جیو جنگ گروپ کے انتظامیہ سے رابطے میں آنے کی کوئی کوشش نہیں کی اور فورا ہی اس کے دفاتر کو توڑنا شروع کر دیا۔

     پولیس سی سی ٹی وی فوٹیج اکٹھا کرنے کے بعد ملزمان کے خلاف کارروائی کرے گی۔ جیو نیوز کے کراچی بیورو کے چیف ، فہیم صدیقی نے نجی نیوز کو بتایا کہ مظاہرین نے چینل کے مرکزی دفتر پر حملہ کیا ، مین گیٹ کے ساتھ ساتھ واک تھرو گیٹ کو بھی نقصان پہنچا اور دفتر کے اندر کے عملے کو بھی زدوکوب کیا۔ تمام جگہ پر شیشے کی دھاریں لگی ہوئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ چینل پہلے ہی ایک اینکر پرسن ارشاد بھٹی کے سوال پر دیئے گئے ریمارکس پر معافی مانگ چکا ہے۔ 

    تاہم ، جو کچھ بھی سوشل میڈیا پر گردش کیا جارہا تھا اس کا جیو نیوز کے ذریعہ نشر کردہ مواد سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ فہیم صدیقی نے انتظامیہ سے مجرموں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔ ٹی وی چینل کے سربراہ اظہر عباس نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ جیو اور جنگ کے دفاتر پر حملے کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کہاں ہے؟

    جاویریہ حارث

    جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

    سبسکرائب
    کو مطلع کریں
    guest
    0 Comments
    Inline Feedbacks
    View all comments
    0
    آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
    ()
    x