مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

یوٹیوب کا ٹک ٹاک اور انسٹاگرام کا مقابلہ کرنے کے لئے نیا پلان

اگر آپ یوٹیوب پر ویڈیوز بنانے والے افراد میں شامل ہیں ، تو گوگل کے زیر ملکیت پلیٹ فارم یوٹیوب شارٹس پر آپ کے لیے نئی ترغیبات آ رہی ہیں۔ 

مختصر ویڈیو ٹول یوٹیوب شارٹس دراصل انسٹاگرام ریل اور ٹک ٹاک کا حریف ہے۔ یوٹیوب نے یوٹیوب شارٹس فنڈ کا اعلان کیا ہے جو مواد بنانے والوں کو 100 ملین ڈالر دے گا۔

یہ بھی پڑھیں | بیوی کے مقابلے میں حسین کی حالت زیادہ ہونی چاہیے ، صداف کنول کے بیان پر مختلف تبصرے

یہ فنڈ 2021-2022 کے دوران نواد بنانے والوان کو ان کی وائرل ویڈیوز کے لیے انعام دینے کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ اس فنڈ کی ادائیگی اس مہینے (اگست) سے شروع ہوگی اور یوٹیوب اہل افراد تک انعام پہنچائے گا۔

 یوٹیوب نے کہا ہے کہ تخلیق کار 100 ڈالر (تقریبا 7 7،400 روپے) سے  10،000 ڈالر (تقریبا 7 7،40،000 روپے) تک کما سکتے ہیں۔ 

یوٹیوب شارٹس سے کیسے کمایا جائے؟

 یوٹیوب نے کہا ہے کہ مواد بنانے والے شارٹس سے جو رقم کما سکتے ہیں اس کا انحصار ناظرین اور ان کی ویڈیوز کی مقبولیت پر ہوگا۔ مواد بنانے والے اپنے چینل کی پچھلے مہینے کی مجموعی کارکردگی پر بونس کی ادائیگی کا دعویٰ کر سکیں گے۔

 یوٹیوب نے وضاحت کی کہ ہر چینل کے شارٹس ہر ماہ کی ماہانہ کارکردگی کے حساب سے ناظرین دیکھتے ہیں ، لہذا اگر کوئی صارف ایک مہینے انعام کے لئے کوالیفائی نہیں کر سکا تو وہ دوسرے مہینے پھر کوشش کر سکتا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔