ہلاکتوں کی اطلاع پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے وکیلوں کے طوفان کے باعث ہوئی.

لاہور: لاہور میں انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے ایمرجنسی وارڈ میں وکلا کے مشتعل ہجوم نے بدھ کے روز حملہ کیا ، سرکاری املاک میں توڑ پھوڑ کی اور صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان پر حملہ کیا۔

قانون نافذ کرنے والے عہدیداروں پر وکلاء کی بدنصیبی بھیڑ کے خلاف تعداد میں اضافہ ہوا۔ حملے کے پیچھے کا مقصد معلوم نہیں ہوسکا۔

اسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں ہلاکتوں کی اطلاعات ہیں کہ اس الجھن اور خوف کے نتیجے میں وکلاء عمارت میں گھس جانے کے بعد اس سہولت کے اندر پھیل گئے۔

اسپتال پہنچنے والے وزیر اطلاعات چوہان کا وکلاء نے جسمانی استحصال کیا۔ اس کے بعد اسے اسپتال سے باہر لے جایا گیا۔

چوہان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ، وہ اس صورتحال سے نمٹنے کے لئے آئے تھے لیکن انہوں نے (وکلاء) اسے بدسلوکی کرنا شروع کردی اور اسے اغوا کرنے کی کوشش کی۔

وزیر اعظم عمران خان نے لاہور میں پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ہونے والے واقعہ کا نوٹس لیا ہے۔

انہوں نے اس سلسلے میں چیف سیکرٹری اور انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب سے رپورٹ طلب کی ہے۔

پاکسیدیلی سے متعلق مزید خبریں پڑھیں:  https://urdukhabar.com.pk/category/international/

ثاقب شیخ۔

cropped-urdu_khabar_logo.png

ہمارے نیوز لیٹر میں شامل ہوں۔

تازہ ترین مضامین، نوکریاں، مفت، تفریحی خبریں براہ راست اپنے ان باکس میں حاصل کریں۔

170000 سبسکرائبرز یہاں ہیں۔