گوگل نے سیلاب زدگان کے لئے فنڈز جمع کرنے کے لئے انٹرنیشنل اپیل کر دی

بیرونی ممالک سے امداد

سیلاب کی تباہ کاریوں کے تناظر میں بیرونی ممالک سے امداد اور امداد پاکستان میں آنے کا سلسلہ جاری ہے۔ گوگل نے بھی پیر کو امدادی رقوم جمع کرنے کے لیے ایک بین الاقوامی اپیل کا آغاز کر دیا ہے۔

دنیا میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والے سرچ انجن گوگل نے اپیل کا آغاز کیا ہے جس نےدنیا بھر میں اپنے اربوں صارفین سے ہر ایک کو 15، 25 اور 50 ڈالر عطیہ کرنے کو کہا ہے۔

اس اپیل میں سنٹر فار ڈیزاسٹر فلانتھراپی (سی ڈی پی) اور ہیومن رائٹس واچ کی ایک رپورٹ کا لنک شامل تھا، جس میں ملک کو فوری مالی اور مادی مدد کی ضرورت کی توثیق کی گئی تھی۔

ایچ آر وی کی رپورٹ

 سی ڈی پی کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ سیلاب نے چاروں صوبے اور تقریباً 15 فیصد آبادی کو متاثر کیا ہے۔ ایچ آر وی کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سیلاب موسمیاتی کارروائی کی ضرورت کو ظاہر کرتے ہیں۔

 پاکستان ان ممالک میں شامل ہے جہاں موسمیاتی تبدیلیوں کا سب سے زیادہ خطرہ ہے۔ اسے عالمی اوسط سے کافی زیادہ گرمی کی شرح کا سامنا ہے اور ممکنہ طور پر زیادہ بار بار اور شدید موسمیاتی واقعات کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | متحدہ عرب امارات کے اسلام آباد میں موجود سفیر کی “ووئی سٹینڈ ٹوگیدر” پر بریفنگ

یہ بھی پڑھیں | ملکہ برطانیہ کی وفات: پاکستان کا آج یوم سوگ

آسٹریا نے امداد کا اعلان کر دیا

 آسٹریا کی وزارت خارجہ کے امدادی فنڈ برائے آفات نے سیلاب زدگان کے لیے ہنگامی امداد کے لیے 20 لاکھ یورو کا اعلان کیا ہے۔

آسٹریا کے وزیر خارجہ الیگزینڈر شلن برگ نے کہا کہ مختص فنڈز اگست میں اقوام متحدہ اور حکومت پاکستان کے مشترکہ طور پر بنائے گئے 2022 پاکستان فلڈ ریسپانس پلان کے تحت تقسیم کیے جائیں گے۔ 

امداد میں خوراک کی حفاظت، ہنگامی زرعی امداد، رہائش، طبی ابتدائی طبی امداد، کمزور آبادی والے گروہوں کے تحفظ، پانی اور حفظان صحت، خواتین کی صحت اور تعلیمی مدد کے شعبوں میں جان بچانے کے اقدامات شامل تھے۔

حکومت انسانی ہمدردی کی کوشش

 آسٹریا کے چانسلر کارل نیہمر نے کہا کہ ان کی حکومت انسانی ہمدردی کی کوششوں کی حمایت کر رہی ہے اور یہ حمایت زمین پر امداد فراہم کرنے کی ملک کی روایت کے مطابق ہے۔ 

فراہم کردہ فنڈز ان بین الاقوامی امدادی تنظیموں کو جائیں گے جو اس وقت متاثرہ افراد کی تکالیف کو کم کرنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔ وائس چانسلر ورنر کوگلر نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان میں سیلاب ایک اور انتہائی موسمی واقعہ ہے جو موسمیاتی بحران کے تیزی سے بڑھتے ہوئے اثرات کو ظاہر کرتا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔