کوویڈ19 کی ویکسن کراچی پہنچ گئی

منگل کے روز 83 ہزار کی تعداد میں سینوفرم ویکسین کی خوراک کی پہلی کھیپ محکمہ صحت سندھ کے حوالے کردی گئی ہے۔ ویکسن خوراکوں کو صوبائی محکمہ صحت کے ڈپو میں محفوظ کیا گیا ہے جہاں درجہ حرارت کو باقاعدہ کیا گیا ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ یہ ویکسین کی مقدار کو محفوظ کرنے کے لئے موزوں ہے۔

 یہ خوراکیں حفاظتی ٹیکوں کے عہدیداروں سے متعلق توسیعی پروگرام کے ذریعہ وصول کی گئیں۔ وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو اور سیکیورٹی عہدیداروں نے ڈپو کو ای پی آئی اور کولڈ چین اسٹوریج میں خوراک پہنچانے کے انتظامات کا جائزہ لیا۔ اس کے بعد ، یہ فیصلہ کیا گیا کہ خوراکیں سیکیورٹی اسکواڈ کی نگرانی میں ایئر پورٹ سے ای پی آئی کے ڈپو منتقل کی جائیں گی۔

 ای پی آئی کے سربراہ ڈاکٹر محمد اکرم سلطان کے مطابق ، دو ڈگری سینٹی گریڈ سے آٹھ ڈگری سینٹی گریڈ میں خوراک ذخیرہ کرنے کے لئے زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت ، اور ویکسینیشن کے پہلے مرحلے میں فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کو ٹیکہ لگانے میں تقریبا دو سے نو دن لگیں گے۔ 

یہ بھی پڑھیں | ٹائیفائیڈ کی ویکسن اسلام آباد اور پنجاب کے 12 اضلاع میں شروع

ان خوراکوں کو پولیس اور سیکیورٹی ایجنسیوں کی نگرانی میں کراچی اور سندھ کے دیگر مقامات پر پہنچایا جائے گا۔ یہ خوراکیں کراچی ہیلتھ ڈائریکٹر اور سندھ کے ہیلتھ ڈائریکٹر جنرل کو بھیجی جائیں گی۔ 

کراچی کے صحت کے ڈائریکٹر کے دفتر کے مطابق ، سرکاری اسپتالوں ، بنیادی صحت یونٹوں اور ضلعی ہیلتھ یونٹوں میں لگ بھگ 60،000 سے 70،000 فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کو پہلے مرحلے میں ٹیکے لگائے جائیں گے۔ 

ڈاکٹر پیچوہو نے حفاظتی ٹیکوں کے مراکز میں تعینات صحت کارکنوں کے لئے بنیادی تنخواہ دینے کا بھی اعلان کیا ہے۔ منگل کو جاری کردہ ایک بیان میں ، انہوں نے فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کا شکریہ ادا کیا اور امید کی ہے کہ وہ ویکسینیشن کے لئے اپنی خدمات رضاکارانہ طور پر جاری رکھیں گے۔ 

بیان کے مطابق ، صرف ان صحت کارکنوں کو ٹیکے لگانے میں معاونت کی اجازت ہوگی جن کو ٹیکہ لگایا گیا ہے۔ سیکیورٹی کے انتظامات قبل ازیں پیر کے روز ، سندھ کے آئی جی پی مشتاق مہر نے حفاظتی ٹیکوں کے مراکز کی حفاظت کے لئے ایک منصوبہ جاری کیا۔ اس سلسلے میں ، آپریشنز اے آئی جی ڈاکٹر اسد ملیہی نے ایک نوٹیفکیشن جاری کیا جس میں کہا گیا ہے کہ سندھ آئی جی پی نے قطرے پلانے والے مراکز میں ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکرز پوسٹ کی حفاظت ، خوراکوں کی محفوظ آمدورفت اور سیکیورٹی کے لئے ایک جامع منصوبہ وضع کرنے کی ہدایت جاری کی ہے۔ 

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

سبسکرائب
کو مطلع کریں
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
()
x