کورونا کی دوسری لہر، وزیر اعظم نے سکول اور صنعتوں کی بندش متعلق بڑا اعلان کر دیا

وزیر اعظم عمران خان نے آج منگل کے روز کہا ہے کہ پاکستان ایک بار پھر لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا ہے۔ انہوں نے سب کو  کورونا وائرس کے خلاف حفاظتی اقدامات پر سختی سے عمل کرنے کی اپیل کی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت میں کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ صوبائی حکومتوں کو ٹریسن ، ٹیسٹ اینڈ کوارنٹائن (ٹی ٹی کیو) اور کورونا وائرس سے متعلق سمارٹ لاک ڈاؤن حکمت عملی پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔ کابینہ کی جانب سے ملک بھر میں کوویڈ19 کی صورتحال پر بریفنگ دی جانے کے بعد وزیر اعظم نے کہا کہ ملک دوبارہ لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا ہے۔

مزید پڑھئے | آسٹریلیا کے شہر ویانہ میں دہشتگرانہ حملے سے 3 اموات، 12 زخمی

 وزیر منصوبہ بندی و ترقیات اسد عمر  نے کابینہ کو بتایا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کے ساتھ ساتھ وائرس سے متاثرہ اموات بھی ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کوویڈ19 کے ایس او پیز پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ بہتر ہے کہ کاروبار ، صنعتیں بند نہ ہوں۔

 ذرائع نے نجی نیوز کو بتایا کہ وفاقی حکومت نے کورونا وائرس ایس او پیز کو سختی سے نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اب تک پاکستان میں 336،260 کورونا وائرس کے کیسز ریکارڈ کیے گئے ہیں  جن میں سے 315،446 صحتیاب ہوئے ہیں اور قریب 7000 اموات ہوئیں۔ سندھ میں سب سے زیادہ تعداد 146،774 ہے جبکہ پنجاب قریب 104،894 کیسز ہیں

 اسلام آباد میں اپنی معاشی ٹیم کے ہمراہ ، وزیر اعظم نے چھوٹی صنعتوں کے لئے ایک پیکیج کا اعلان کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ اب پاکستان کی صنعتوں کو بند نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ 50 فیصد کی لاگت سے چھوٹی صنعتوں کو اضافی بجلی فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوویڈ 19 کے کیسوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا ہے تو ایس او پیز پر عمل درآمد کرتے ہوئے کاروبار اور صنعتیں اپنا کام جاری رکھیں گے۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ مہلک کورونا وائرس کی دوسری لہر پوری دنیا میں تیزی سے پھیل رہی ہے اور پاکستان میں بھی کیسز آ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالٰی پاکستان کے ساتھ بہت مہربان ہے؛ ہم نے دانشمندانہ فیصلے کیے ہیں جس پر اللہ کا شکر ہے۔

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *