کشمیریوں کو حق خوداریت ملنے تک ان کے ساتھ کھڑے ہیں، دفتر خارجہ

کشمیری بھائیوں اور بہنوں

دفتر خارجہ کے ترجمان عاصم افتخار احمد نے کہا ہے کہ پاکستان کے عوام ہمیشہ اپنے کشمیری بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ کھڑے رہیں گے اور ان کے حق خودارادیت کے حصول کے لیے ان کی ہر ممکن حمایت جاری رکھیں گے جس کی ضمانت اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں دی گئی ہے۔ 

 جمعہ کو یہاں ہفتہ وار پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گزشتہ سات دہائیوں کے دوران کشمیریوں کی تین نسلوں نے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی طرف سے انہیں ان کا حق خودارادیت دلانے کے پختہ عزم کا احترام کرنے کا انتظار کیا۔

 انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ بھارت کی غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے خاتمے، 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اور غیر قانونی اقدامات کو واپس لینے، ظالمانہ قوانین کی منسوخی اور متعلقہ اقوام متحدہ کے قانون کے نفاذ کا مطالبہ کرے۔ 

بھارتی قابض افواج

 ترجمان نے کہا کہ یہ بات افسوسناک ہے کہ 5 اگست 2019 سے اب تک 650 سے زائد کشمیریوں کو شہید کیا جا چکا ہے، جن میں سے صرف سال 2022 میں 130 سے ​​زائد کشمیری شہید ہو چکے ہیں۔ گزشتہ ہفتے بھارتی قابض افواج نے جموں کشمیر کے علاقوں کولگام پلوامہ اور راجوری میں مزید چھ بے گناہ کشمیریوں کو شہید کیا۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر میں بھارتی فورسز کی طرف سے ماورائے عدالت قتل، ہراساں کرنا اور تذلیل کرنا، من مانی گرفتاریاں اور گھروں پر چھاپے معمول بن چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں | ایچ ای سی نے پاکستانی طلباء و طالبات کے لئے انٹرنیشنل سکالر شپس کا اعلان کر دیا

یہ بھی پڑھیں | ایف آئی اے نے عمران خان سے فنڈنگ کا ریکارڈ مانگ لیا 

عاصم افتخار نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے لوگ اپنے یوم آزادی کا جشن منانے جا رہے ہیں لیکن بی جے پی حکومت نے 14 اگست کو ‘تقسیم کی ہولناکی یادگاری دن’ کے موقع پر اپنا شرارتی اقدام شروع کیا ہے۔

بی جے پی کی زیر قیادت ہندوستان

 ترجمان نے مزید کہا ہے کہ ہم اس اقدام کی سختی سے مذمت کرتے ہیں جو نفرت، غلط معلومات اور فرقہ پرستی کی قابل مذمت پلے بک کی عکاسی کرتا ہے، جو آج کے بی جے پی کی زیر قیادت ہندوستان کی پہچان بن چکی ہے۔

 عاصم افتخار نے کہا کہ یہ افسوسناک ہے کہ بی جے پی حکومت اپنے منقسم سیاسی ایجنڈے کے تحت تاریخ کی یک طرفہ اور مسخ شدہ تشریح کے ذریعے عوام کے جذبات سے کھیلنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہند کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ آزادی سے متعلق واقعات پر سیاست کرنے سے باز آجائے اور اس کے بجائے ان تمام لوگوں کی یادوں کا مخلصانہ احترام کرے جنہوں نے سب کے بہتر مستقبل کے لیے اپنی جانیں قربان کیں۔ 

انہوں نے کہا کہ میں یہ واضح کہتا ہوں کہ پاکستان فخر کے ساتھ ہماری ڈائمنڈ جوبلی کا شاندار سنگ میل منائے گا جیسا کہ قوم کے لیے موزوں ہے۔ اس اہم موقع کو مختلف سرگرمیوں کے ساتھ منانے کے لیے وفاقی اور صوبائی حکومتوں میں تیاریاں جاری ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔